نوازشریف کی افغان حکام سے ملاقات لیکن دراصل یہ ملاقات کس کی درخواست پر ہوئی تھی؟ شاہد خاقان عباسی نے تہلکہ خیز انکشاف کردیا

نوازشریف کی افغان حکام سے ملاقات لیکن دراصل یہ ملاقات کس کی درخواست پر ہوئی ...
نوازشریف کی افغان حکام سے ملاقات لیکن دراصل یہ ملاقات کس کی درخواست پر ہوئی تھی؟ شاہد خاقان عباسی نے تہلکہ خیز انکشاف کردیا

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) سابق وزیراعظم میاں محمد نواز شریف نے گزشتہ دنوں افغانستان کے قومی سلامتی کے مشیر حمد اللہ محب کے ساتھ ملاقات کی، جس پر انہیں تنقید کا نشانہ بنایا جا رہا ہے کیونکہ حال ہی میں حمد اللہ محب نے پاکستان کے بارے میں نازیبا زبان استعمال کی تھی۔ اس حوالے سے اب سابق وزیراعظم اور مسلم لیگ ن کے سینئر رہنما شاہد خاقان عباسی نے انکشاف کر دیا ہے کہ میاں نواز شریف نے یہ ملاقات افغان صدر اشرف غنی کی درخواست پر کی تھی۔ 

ڈیلی پاکستان گلوبل کے مطابق نجی ٹی وی چینل ڈان نیوز کے ایک شو میں گفتگو کرتے ہوئے شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ ”افغان صدر کی طرف سے نواز شریف کو اس ملاقات کا دعوت نامہ 5ماہ قبل آیا تھا۔ ملاقات طے ہونے کے بعد حمد اللہ محب کی طرف سے متنازع بیان سامنے آیا جس کی پاکستان نے مذمت کی اور یہ بہت اچھا ہوا کہ پورے پاکستان نے اس کی مذمت کی۔“

شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا کہ ”تعلقات دو ملکوں کے درمیان ہیں، دو شخصیات کے درمیان نہیں ہیں۔ افغان وفد ایک سابق وزیراعظم سے ملنے آیا تھا اور یہاں تک کہ اگر کوئی آپ کا دشمن ہو اور آپ کے دروازے پر آتا ہے تو آپ اس سے ملتے ہیں، جبکہ افغانستان ہمارا دوست ہے۔ حمد اللہ محب ایک وفد کا حصہ تھے جو سفارتخانے کے عہدیداروں اور وزراءپر مشتمل تھا۔اس ملاقات میں دوطرفہ تعلقات پر بات چیت کی گئی۔ میں سمجھتا ہوں کہ اس ملاقات سے نواز شریف پاک افغان تعلقات میں بہتری چاہتے ہیں اور مجھے امید ہے کہ ان میں بہتری آئے گی۔“

مزید :

علاقائی -اسلام آباد -