کانگو میں اقوام متحدہ کے امن  مشن کے خلاف مظاہروں میں   15 افراد ہلاک،50زخمی

  کانگو میں اقوام متحدہ کے امن  مشن کے خلاف مظاہروں میں   15 افراد ہلاک،50زخمی

  

کنشاسا(شِنہوا)ڈیموکریٹک ریپبلک آف کانگونے کہا ہے کہ شمال مشرقی صوبہ شمالی کیوو میں اقوام متحدہ کے امن مشن کو نشانہ بنانے کے لیے ہونے والے مظاہروں کے دوران پیر سیایک امن فوجی اور اقوام متحدہ کے دو پولیس افسران سمیت  کم از کم 15 افراد ہلاک اور 50 دیگر زخمی ہوئے ہیں۔گزشتہ روز دیر گئے ایک مشترکہ پریس بریفنگ کے دوران، حکومت کے ترجمان پیٹرک مویا نے، ملک میں اقوام متحدہ کے ادارہ استحکام مشن (مونسکو) کے قائم مقام سربراہ خسیم ڈائیگن کے ہمراہ  کہا کہ حکام نے متعدد مظاہرین کو گرفتار کر لیا ہے اور تفتیش جاری ہے۔    ترجمان نے پرسکون رہنے پر زور دیتے ہوئے مونسکو کے اہلکاروں اور اس کی املاک کی حفاظت کو یقینی بنانے کے لیے ہر ممکن اقدامات کرنے کا عہد کیا۔    انہوں نے کہا کہ نیلے ہیلمٹ کے خلاف تشدد کا کوئی جواز نہیں بنتا، انہوں نے مزید کہا کہ ذمہ داروں کو انصاف کے کٹہرے میں لایا جائے گا۔ ڈائیگن نے تنا کو کم کرنے کی کوششوں پر زور دیا۔ انہوں نے مزید کہا کہ "تنا میں کچھ بھی حل نہیں ہو سکتا۔ ہمیں اس کا حل تلاش کرنے کے لیے ایک نئے مرحلے کا آغاز کرنا چاہیے۔"

کانگو

مزید :

صفحہ اول -