سلا متی کونسل تنازع فلسطین کو مؤثر طریقے سے حل کرے،پاکستان 

    سلا متی کونسل تنازع فلسطین کو مؤثر طریقے سے حل کرے،پاکستان 

  

  نیویارک (این این آئی)پاکستان نے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ مشرق وسطیٰ میں امن اور استحکام کے قیام کیلئے ترجیحی طور پر اسرائیلی قبضے کے خاتمے اور طویل حل طلب تنازعہ فلسطین کو مؤثر طریقے سے حل کرے۔اقوام متحدہ میں پاکستان کے مستقل مندوب منیر اکرم نے مشرق وسطی کی صورتحال پر منعقدہ 15رکنی سلامتی کونسل کے اجلاس میں بحث کے دوران کہا کہ مقبوضہ فلسطین میں اسرائیلی قبضہ اور جارحیت پورے مشرق وسطی میں عدم استحکام، کشیدگی اور تصادم کی بنیادی وجہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ سلامتی کونسل مقبوضہ فلسطین میں اقوام متحدہ کے چارٹر اور بین الاقوامی قانون کے اصولوں پر عملدرآمد کرانے اور تسلیم کردہ دو ریاستی حل کو فروغ دینے کے عمل کو بحال کرنے میں میں ناکام رہی ہے اور، نہ ہی اس نے انسانی حقوق، بین الاقوامی قانون اور کونسل کی اپنی قراردادوں کی اسرائیلی خلاف ورزیوں کی مذمت کی ہے۔انہوں نے کہا کہ اگر فلسطین پر اسرائیلی قبضہ برقرار رہا تو فلسطین میں امن قائم نہیں ہو گا۔ انہوں نے کہا کہ اسرائیلی مظالم اور جارحیت فلسطینیوں کی ہر آنے والی نسل کی اپنے حق خود ارادیت کے حصول، آزادی اور بنیادی حقوق کے حصول کی جدوجہد کو کمزور نہیں کر سکتی۔ انہوں نے زور دیا کہ مقبوضہ فلسطینی سرزمین میں اسرائیل کے جارحانہ کارروائیاں، اسرائیلی بستیوں کے لیے فلسطینی شہریوں کی زمینوں اور املاک پر قبضے، نہتے فلسطینی بچوں، خواتین اور نوجوانوں پر تشدد اور غزہ کی ناکہ بندی سلامتی کونسل کی قراردادوں اور انسانی حقوق سمیت بین الاقوامی قوانین کی سنگین خلاف ورزیاں ہیں۔پاکستانی مندوب منیر اکرم نے کہا کہ قابض ریاست اسرائیل اور مظلوم فلسطینی عوام کے درمیان کوئی اخلاقی، قانونی یا سیاسی برابری نہیں ہے۔

پاکستان 

مزید :

صفحہ اول -