خواجہ فرید یونیورسٹی رحیم یارخان اورجامعہ اوکاڑہ میں ایم او یو سائن

خواجہ فرید یونیورسٹی رحیم یارخان اورجامعہ اوکاڑہ میں ایم او یو سائن

  

  

رحیم یار خان (بیورو رپورٹ)خواجہ فرید یونیورسٹی آف انجینئرنگ اینڈ انفارمیشن ٹیکنالوجی اور یونیورسٹی آف اوکاڑہ کے درمیان ایم او یو پر دستخط کئے گئے۔ معاہدے (بقیہ نمبر24صفحہ6پر)

پر دستخط وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر محمد سلیمان طاہر اور یونیورسٹی آف اوکاڑہ کے وی سی پروفیسر ڈاکٹر واجد نے کئے۔ معاہدے کے تحت دونوں یونیورسٹیز طلبہ کی تدریسی و تحقیقی سرگرمیوں میں ایک دوسرے کو معاونت فراہم کریں گی۔ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وائس چانسلر یونیورسٹی آف اوکاڑہ پروفیسر ڈاکٹر واجد کا کہنا تھا کہ رحیم یار خان اپنے صحرا جب کہ اوکاڑہ ویٹرنری کے حوالے سے الگ الگ پہچان رکھتے ہیں۔ دونوں جامعات کے طالب علم ان خصوصیات سے مستفید ہوسکیں گے۔ ایک دوسرے کی لیبارٹریز سے استفادہ کرسکیں گے۔ انہوں نے بتایا کہ دنیا میں سب سے زیادہ دودھ دینے والی بھینسیں اوکاڑہ میں ہیں، اوکاڑہ یونیورسٹی نیلی راوی بھینسوں کی نسل کے حوالے سے خصوصی تحقیق کررہی ہے تاکہ اس قیمتی نسل سے مستفید ہوا جاسکے۔ انہوں نے خواجہ فرید یونیورسٹی کی تعلیمی و تدریسی خدمات جب کہ وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر سلیمان طاہر کی قیادت کوبھی سراہا۔ اس دوران خواجہ فرید یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر محمد سلیمان طاہر نے کہا کہ خواجہ فرید یونیورسٹی باہمی تعاون، انڈسٹری لنکجز اور پڑھو اور آگے بڑھو کے اصولوں پر عمل پیرا ہے۔ بعدازاں صنعت اور تعلیم کے تعاون میں اضافے سے متعلق دو روزہ تربیتی ورکشاپ کے دوسرے سیشن کا آغاز کیا گیا۔ ورکشاپ کے آخری روز  پاکستان انسٹی ٹیوٹ آف انٹرپرینیورشپ ، کمپیوٹر سوسائٹی آف پاکستان کے صدر اور سی ای او پرفیسر طاہر محمود چودھری نے اپنا لیکچر دیا۔ انہوں نے مسائل کا پتہ لگانے اور ان کے حل کے طریقے کار سے متعلق تفصیلی بریفنگ دی۔ انہوں نے شرکا سے مختلف سرگرمیاں بھی کروائیں تاکہ شرکا کی صلاحیتوں اور استعداد کار میں اضافہ کیا جاسکے۔ اس موقع پر ڈائریکٹر اسٹوڈنٹس افیئرز ڈاکٹر اسلم خان، ڈاکٹر فرحان چغتائی، ڈاکٹر جلات خان، ڈاکٹر طارق محمود، ڈاکٹر شاہد عتیق، ڈاکٹر احمد صہیب سمیت تمام شعبہ جات کے سربراہان، فیکلٹی ممبران اور دیگر شریک تھے۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -