سندھ میں مون سون کی تباہ کاری، 90افراد جان کی بازی ہار گئے

    سندھ میں مون سون کی تباہ کاری، 90افراد جان کی بازی ہار گئے

  

      کراچی(اسٹاف رپورٹر)سندھ میں مون سون کی تباہ کاریوں کے دوران مختلف حادثات میں 90 افراد جان کی بازی ہار گئے۔تفصیلات کے مطابق پی ڈی ایم اے نے 20 جون کو مون سون کے آغاز سے 26 جولائی تک سندھ میں ایک ماہ میں ہونے والے جانی و مالی نقصانات کی تفصیلات جاری کر دی ہیں۔پی ڈی ایم اے کے مطابق سندھ میں بارشوں کے سبب مختلف حادثات میں 90 افراد جان کی بازی ہارے، جن میں 39 مرد، 46 بچے اور 5 خواتین شامل ہیں۔کراچی میں 40 افراد جان کی بازی ہارے، جن میں 10 کا تعلق ملیر سے، 7 کا کورنگی سے، 7 کا ضلع جنوبی سے، 6 کا ضلع شرقی سے، 5 کا ضلع وسطی سے، 4 کا ضلع غربی اور 1 کا تعلق ضلع کیماڑی سے تھا۔ 22 جون تا 26 جولائی 51 افراد مختلف حادثات میں زخمی ہوئے، ان میں 26 مرد، 11 عورتیں اور 16 بچے شامل تھے۔پی ڈی ایم اے کے مطابق سب سے زیادہ اموات اندرون سندھ میں خیرپور میں ہوئیں جن کی تعداد 25 ہے، خیرپور میں جاں بحق ہونے والوں میں 17 بچے بھی شامل تھے، ٹھٹھہ میں 10 لوگ جان کی بازی ہارے۔کراچی میں بارشوں کے دوران ضلع وسطی میں 2 گھروں، 3 دکانوں کو نقصان پہنچا، غربی میں 16 کلو میٹر کی روڈ تباہ جب کہ 5 گھروں کو نقصان پہنچا، شرقی میں 2 گھروں، کورنگی میں 5، کیماڑی میں 3 اور ضلع جنوبی میں ایک گھر کو نقصان ہوا۔ایس بی سی اے کے مطابق سندھ بھر میں 274 گھروں کو معمولی نقصان پہنچا جب کہ 2030 گھر مکمل تباہ ہو گئے، اندرون سندھ سب سے زیادہ تباہ کاریاں ٹھٹھہ میں ہوئیں، جہاں 6 اہم سڑکوں کا 56 کلو میٹر کا ٹریک تباہ جب کہ 9 ہزار سے زائد گھروں کو نقصان پہنچا، اور جامشورو میں 25 کلو میٹر کا ٹریک تباہ ہوا۔رپورٹ کے مطابق 1590 افراد اس وقت ریلیف کیمپوں میں موجود ہیں، اندرون سندھ 35 ایکڑ زرعی زمین کو بھی بارشوں کے باعث نقصان ہوا۔

مزید :

صفحہ اول -