سروس سٹر کچرکی منظوری تک ہڑتال جاری رہے گی ینگ ڈاکٹر ز ایسوسی ایشن

سروس سٹر کچرکی منظوری تک ہڑتال جاری رہے گی ینگ ڈاکٹر ز ایسوسی ایشن

  

سروس سٹر کچرکی منظوری تک ہڑتال جاری رہے گی ینگ ڈاکٹر ز ایسوسی ایشن

لاہور(جاوید اقبال) ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن کے سربراہ ڈاکٹر حامد بٹ نے کہا ہے کہ وزیراعلیٰ پنجاب کی طرف سے ہڑتال ختم کرنے کے لئے دی گئی 3 دن کی مہلت کو تسلیم نہ کرتے ہیں نہ اس کی کوئی حیثیت ہے سروس سٹرکچر کی منظوری تک ہڑتال جاری رہے گی آئندہ ہفتے سے ایوان وزیراعلیٰ کا گھیراﺅکریں گے۔ حامد بٹ نے کہا کہ اس دوران پولیس حکومت اور ڈاکٹروں کی لڑائی کے درمیان ہوئی اور ڈاکٹروں پر تشدد کیا یا ان کی پکڑ دھکڑ کی تو پورے پنجاب میں پولیس والوں کے علاج کا بائیکاٹ کریں گے اور زخمی ہوکر ایجنسی وارڈ میں بھی آنے والے پولیس والوں کا علاج نہیں کیاجائے گا وہ ”پاکستان“ کو انٹرویو دے رہے تھے ڈاکٹر حامد بٹ نے کہا کہ وزیراعلیٰ دھمکیاں دے کر کیا ثابت کرنا چاہتے ہیں وہ اپنا ”چاﺅ“ پورا کریں زیادہ تنگ کیا تو پنجاب بھر کے ڈاکٹرز اجتماعی استعفے دے کر گھروں کو چلے جائیں گے انہوں نے کہا کہ ہمارے پاس استعفوں ایمرجنسی اور ان ڈور بند کرنے کا آپشن موجود ہے۔ مگر ہم ایسا مریضوں کی خاطر نہیں کریں گے ڈاکٹر حامد بٹ نے کہا کہ ایک طرف حکومت سپیشل سیکرٹری صحت داﺅد خان کے ذریعے مذاکرات کررہی ہے دوسری طرف دھمکیاں دی جارہی ہیں ینگ ڈاکٹرز کو پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن اور پنجاب میڈیکل ٹیچرز ایسوسی ایشن سمیت تمام تنظیموں کی حمایت حاصل ہے۔ جنرل کونسل کا اجلا س ہو گا جو سیون کلب کے گھیراﺅ کی منظوری دے گی آئندہ ہفتے سے ایوان وزیراعلیٰ کا گھیراﺅ شروع کریں گے پھر کسی کو اندر جانے دیں گے نہ باہر وزیراعلیٰ گھیراﺅ روک کر دکھا دیں اور ہم آئی جی پولیس کو مطلع کرنا چاہتے ہیں کہ اس لڑائی کا حصہ نہ بنیں۔

مزید :

صفحہ اول -