سرجیت سنگھ کی آج بھارت حوالگی کے تمام انتظامات مکمل کرلئے گئے

سرجیت سنگھ کی آج بھارت حوالگی کے تمام انتظامات مکمل کرلئے گئے

  

لاہور (رپورٹ: یونس باٹھ) محکمہ جیل خانہ جات پنجاب نے بھارتی جاسوس سرجیت سنگھ کو بھارت حوالگی کے تمام تر انتظامات مکمل کرلئے ہیں کوٹ لکھپت جیل کے تمام تر انتظامات مکمل کرلئے ہیں کوٹ لکھپت جیل کا عملہ سرجیت سنگھ کو آج پولیس کی نگرانی میں واہگہ بارڈر پر انڈین فورس کے حوالے کرے گا رہائی دن دس بجے عمل میں لائی جائے گی اور میڈیا کے کسی شخص کو سرجیت سنگھ کے قریب پر مارنے کی اجازت نہیں دی جائے گی ممکنہ خطرے کے پیش نظر سنٹرل جیل کوٹ لکھپت میں چوبیس گھنٹے قبل ہی پولیس فورس کی اضافی نفری تعینات کردی گئی ہے واضح رہے بھارتی جاسوس کو 1985 میں گرفتار کرکے ملٹری کورٹس نے سزائے موت کا حکم سنایا تھا 1988ءمیں شہید محترمہ بے نظیر بھٹو کے وزیراعظم منتخب ہونے پر اس وقت کے صدر غلام اسحاق خاں نے سزائے موت پانے والے تمام قیدیوں کی سزا ختم کرکے عمر قید میں تبدیل کرنے کی ہدایت کی تھی ماسوائے غیرملکی سزائے موت پانے والوں کے تاہم اب ایوان صدر سے رحم کی اپیل منظور ہونے کے بعد سرجیت سنگھ کو رہا کرنے کا حکم دیدیا گیا ہے ایوان صدر سے اس حکم نامے کے بعد پاکستانی عوام میں شدید اضطرابی اور غم وغصہ کی لہر پائی جاتی ہے۔ اس حوالے سے ملک کے مختلف حصوں میں مظاہرے بھی ہورہے ہیں محکمہ داخلہ پنجاب نے سنٹرل جیل کوٹ لکھپت میں پولیس کی اضافی نفری تعینات کرتے ہوئے سیکیورٹی کو الرٹ رہنے کی ہدایت کردی ہے محکمہ جیل خانہ ذرائع کے مطابق سرجیت سنگھ کی رہائی نہیں ہوگی اسے انڈین گورنمنٹ کے حوالے کرنے کا حکم ہے اور آج دن دس بجے پولیس کی نگرانی میں سنٹرل جیل کوٹ لکھپت میں ایک گاڑی اندر منگوائی جائے گی جس میں سرجیت سنگھ کو سوار کرکے محکمہ جیل خانہ جات کا عملہ ڈپٹی سپرنٹنڈنٹ بشیر خان کی نگرانی میں اسے واہگہ بارڈر پر پہنچائے گا اور انڈین فورس کے حوالے کردیاجائے گا۔

مزید :

صفحہ اول -