خیبر پختونخواہ ریونیو اتھارٹی نے خدما ت پر سیلز ٹیکس کی مد میں ہدف عبور کر لیا

خیبر پختونخواہ ریونیو اتھارٹی نے خدما ت پر سیلز ٹیکس کی مد میں ہدف عبور کر لیا

پشاور(اے پی پی)خیبر پختونخواہ ریونیو اتھارٹی نے خدما ت پر سیلز ٹیکس کی مد میں اپنا ہدف عبور کر لیاتھارٹی نے خیبر پختونخواہ حکومت کیلئے گزشتہ چار مہینوں میں خدمات پر سیلز ٹیکس کی مد میں چار ارب سے زیادہ محاصل وصول کئے۔ یاد رہے کہ موجودہ ڈائریکٹر جنرل محمد ناصر خان نے اپریل میں ہی چارج سنبھال لیا تھا۔ جن کی ہدایت پر اتھارٹی نے خدمات سے منسلک چھوٹے ، درمیانے اور بڑے درجے کے شعبہ جات سے ہر ماہ مسلسل ایک ارب روپے تک محاصل وصولی کا اپنا روایتی ریکارڈ برقرار رکھتے ہوئے امسال 2017۔18 کا ہدف عبور کیا۔جبکہ ادارہ اپنی اگلے ہدف کیلئے پر امید ہے۔اس موقع پر ڈی جی نے بتایا کہ ادارے کی کارکردگی میں دن بہ دن اضافہ ہو رہاہے۔جس کا واضح ثبوت اپریل کے مہینے سے جون تک صوبے کے لئے ہر ماہ ایک ارب سے زیادہ محاصل وصول کرنا ہے۔انہوں نے بتایا کہ اتھارٹی کی بہترین ٹیم ورک اور انتھک محنت اور حدمات سے وابستہ تمام چھوٹے بڑے شعبہ جات اور سروس پروائڈرز کے تعاون سے ہی اتھارٹی نے پچھلے چار ماہ میں چار ارب سے زیادہ محاصل وصول کرنے کا یہ ریکارڈ برقرار رکھا۔ڈی جی نے مزید واضح کیا کہ صوبے کے لئے یہ بات بھی خوش آئند ہے کہ اتھارٹی نے خدمات سے جھوڑے صوبے کے چھوٹے اور درمیانے درجے کے شعبہ جات کو بھی خدمات پر سیلز ٹیکس کے لئے نہ صرف قائل کیا جس سے صوبے کے محاصل میں خاطر خواہ اضافہ ہوا بلکہ ان شعبہ جات کو بھی صوبے کی ترقی میں اپنا کردار ادا کرنے کا موقع میسر کیا۔

اْنہوں نے بتایا کہ اس سے پہلے ادارے کا زیادہ تر انحصار ٹیلی کام، آئل اینڈ گیس جیسے بڑے شعبہ جات پر ہوا کرتا تھا تاہم اس سال اپریل سے ادارے نے دوسرے شعبہ جات جس میں چھوٹے اور درمیانے درجے کے شعبہ جات بھی شامل ہے، پر بھی توجہ مرکوز کرتے ہوئے چھوٹے چھوٹے اماؤنٹس وصول کرکے صوبے کے محاصل کو گیارہ ارب تک پہنچایا۔اْنہوں نے بتایا کہ امسال ادارے کو بارہ ارب کا ہدف دیا گیا تھا جس کو اتھارٹی نے کامیابی سے پورا کیا تاہم فیڈرل بورڈ آف ریونیوکے ذمے اتھارٹی کے1.9 بلین واجب الادا ہے جس کے ملنے سے خیبر پختونخواہ ریونیواتھارٹی دیئے گئے ہدف سے تجاوز کرجائیگی۔ اْنہوں ادارے کے منتظمین کی انتھک محنت کوسراہتے ہوئے سٹاف کے لئے ایک ماہ کے بنیادی اعزازیہ کی منظوری دیتے ہوئے توقع ظاہر کی کہ مستقبل میں بھی وہ اسی طرح صوبے کی ترقی کے لئے محنت جاری رکھیں گے۔

مزید : کامرس