ڈالر کی اونچی اڑان سے اشیائے خوردونوش ، ملٹی نیشن مصنوعات 15فیصد مہنگی

ڈالر کی اونچی اڑان سے اشیائے خوردونوش ، ملٹی نیشن مصنوعات 15فیصد مہنگی

لاہور(اسد اقبال)انٹر بنک مارکیٹ میں ڈالر کی قدر میں اضافے کا بدترین اثر ہر قسم کی اشیائے ضروریہ پر پڑ رہا ہے۔ پیداواری صلاحیت کم ہونے کے ساتھ ساتھ پرو ڈیکٹیو یو نٹس اپنی اشیا کی قیمتوں میں اضافہ کر نے پر مجبو رہیں ۔ہر طرح کی استعمال کی اشیاء صارفین کی پہنچ سے دور ہوتی جارہی ہیں ملٹی نیشنل کمپنیوں کی پراڈکٹس کو پر لگ گئے ہیں ان کے نرخوں میں 10سے 15فیصد تک اضافے اشیائے خوردونوش کی بڑھتی قیمتوں نے پریشان کر کے رکھ دیا ہے ۔ماہر معیشت تیمور ملک نے ڈالر کی قیمت میں اضافہ اور پاکستان میں ہونے والی ہوشر با مہنگائی کو آئی ایم ایف اور ورلڈ بنک کی طرف سے پھیلایا جانے والا جال قرار دیا ہے اور کہا ہے کہ ڈالر کے چڑھاؤ کے آگے بند باندھے بغیر پاکستان میں مہنگائی کی روک تھام ممکن نہیں جبکہ ملک میں گرانی کی صورتحال کو ملکی معیشت کی تباہی کا شاخشانہ بھی قرار دیا جارہا ہے ۔ 27مارچ 2018ء سے 115روپے 50پیسے کی سطح پر رہنے والے ڈالر انٹر بینک مارکیٹ میں 122روپے کی بلند ترین سطح پر جا پہنچا جبکہ امریکی ڈالر کی قدر میں گزشتہ 6ماہ کے دوران 15فیصد سے زائد مہنگا ہوچکا ہے ۔ذرائع کا کہنا ہے کہ آئی ایم ایف سے کئے جانے والے معاہدے کے تحت رواں ماہ کے دوران ڈالر کی انٹر بینک قیمت 130روپے کر دی جائے گی ۔دوسری جانب رواں ماہ میں کے اختتام تک حکومت نے ساڑھے 3سے4ارب ڈالر کی قرضوں کی مد میں بیرونی ادائیگیاں بھی کرنی ہیں۔واضح رہے کہ ڈالر کی قیمت میں اضافہ سے پاکستان کے غیر ملکی زرمبادلہ کے ذخائر میں مسلسل کمی آرہی ہے اورسٹیٹ بینک کے پاس زرمبادلہ کے ذخائر کم ہو کر 10ارب ڈالر رہ گئے ہیں ۔جو دو ماہ کی درآمدات کے ادائیگیوں کیلئے بھی ناکافی ہیں ۔ڈالر کی قیمت میں اضافہ ہونے اور پاکستانی روپے کی قدر میں کمی کے منفی اثرات جہاں برآمد کنندگان کو نقصان کی صورت میں برداشت کرنا پڑتے ہیں وہیں اشیائے ضروریہ اور اشیائے خوردونوش کی قیمتیں بڑھنے سے عام آدمی کی قوت خرید جواب دے جاتی ہے دوسری جانب پاکستان میں زیادہ تر اشیائے ضروریہ کا استعمال غیر ملکی اشیاء کا ہے جس کا بھرپور فائدہ اٹھاتے ہوئے ملٹی نیشنل کمپنیوں نے اپنی پراڈکٹس کی قیمتوں میں 15فیصد تک اضافہ کردیا ہے جن میں ،ادویات ،خشک دودھ ، کاسمیٹکس ، ٹو تھ پیسٹ ، چائے پتی ، شیمپو ، صابن ، میک اپ سامان ، کیڑے مار ادویات ، گارمنٹس سمیت دیگر اشیاء شامل ہیں ۔

ڈالر

مزید : صفحہ آخر