پاکستان کی بقاء کیلئے ڈیم ضروری ہیں ، چاروں بھائیو ں کو قربانی دینا ہو گی : چیف جسٹس

پاکستان کی بقاء کیلئے ڈیم ضروری ہیں ، چاروں بھائیو ں کو قربانی دینا ہو گی : ...

اسلام آباد(سٹاف رپورٹر ، مانیٹرنگ ڈیسک ، نیوز ایجنسیاں) چیف جسٹس پاکستان نے کہا ہیکہ کالا باغ ڈیم سے ملکی اکائیوں کے اتحاد پر برے اثرات پڑتے ہیں تو دوسرے آپشنز پر جانا ہوگا۔پانی کے بحران اور ڈیمز کی تعمیر پر ماہرین کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے چیف جسٹس پاکستان جسٹس ثاقب نثار نے کہا کہ پانی پاکستان کی بقاء کا مسئلہ بن چکا ہے، پانی کی صورتحال انتہائی خطرناک ہے، ہمیں اس معاملے کے لیے بہت سنجیدہ ہونا ہو گا اور انشاء اللہ ملک کے بہترین مفاد میں مسائل کا حل نکلے گا۔انہوں نے کہا کہ بدقسمتی سے میڈیا اس مسئلے کو اتنی اہمیت نہیں دے رہا، ہم کالا باغ ڈیم پر شمس المک صاحب کو سنیں گے، کالا باغ ڈیم سے ملکی اکائیوں کے اتحاد پر برے اثرات پڑتے ہیں تو دوسرے ا?پشنز پر جانا ہوگا، شمس الملک صاحب سیدوسرے آپشنزکامعلوم کریں گے، یہ بھی پوچھیں گے فندز کے لیے کیا انتظامات کیے جاسکتے ہیں؟جسٹس ثاقب نثار نے کہا کہ دیکھنا ہوگا ڈیمز آج بنانے شروع کریں تو کب مکمل ہوں گے؟ پڑوسی ملک کے ڈیم بنانے سے پاکستان پر بہت برے اثرات پڑیں گے۔اس سے قبل کالا باغ ڈیم کیس کی سماعت کے دوران سپریم کورٹ کے چیف جسٹس ثاقب نثار نے ریمارکس دیئے کہ ڈیمز پاکستان کی بقاء کے لئے نہایت ضروری ہیں‘ چاروں بھائیوں کو ڈیمز کی تعمیر کے لئے قربانی دینا ہوگی‘ کالا باغ ڈیم کا مسئلہ اتنا سادہ نہیں ہے‘جو ڈیم متنازعہ نہیں ان پر فوکس پہلے کیوں نہ کریں‘ سیاسی حکومتوں نے دس سال میں ڈیمز کی تعمیر کے لئے کیا کیا؟‘ ڈیمز کی تعمیر کے لئے وکلاء بھی حصہ ڈالیں گے‘ہم نے پانی کے مسئلے کو حل کرنا ہے ‘کالا باغ ڈیم نہ بنا تو خیبرپختونخوا کی زمین کو پانی نہیں مل سکے گا ‘ہمیں ہنگامی اور جنگی بنیادوں پر کام کرنا ہوگا‘ لوگوں کو اکٹھا کریں تاکہ لوگوں کی تجاویز آئیں سب کو مل بیٹھ کر ایشو کے حل کے لئے سوچنا ہوگا۔ بدھ کو سپریم کورٹ میں کالا باغ ڈیم کی تعمیر سے متعلق کیس کی سماعت چیف جسٹس کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے کی۔ چیف جسٹس نے کہا کہ سابق چیئرمین واپڈا شمس الملک اور اعتزاز کو معاونت کا کہا ہے درخواست گزار نے موقف اپنایا کہ تمام صوبوں نے کالا باغ ڈیم پر اتفاق کیا تھا چیف جسٹس ثاقب نثار نے کہا کہ کالا باغ ڈیم کا مسئلہ اتنا سادہ نہیں ہے شمس الملک نے بتایا کہ کچھ لوگ کہتے ہیں ڈیم بنانا چیف جسٹس کا کام نہیں دنیا میں 46 ہزار ڈیم تعمیر ہوچکے ہیں‘ چائنا میں 22ہزار ڈیم بنائے گئے ہیں چین ایک ڈیم سے تیس ہزار میگا واٹ بجلی پیدا کرتا ہے بھارت 4500 ڈیم تعمیر کرچکا ہے شمس الملک نے بتایا کہ چیف جسٹس کے علاوہ کوئی اور انصاف نہیں کرسکتا۔ چیف جسٹس ثاقب نثار نے کہا کہ ڈیمز پاکستان کی بقاء کے لئے نہایت ضروری ہیں چاروں بھائیوں میں اتفاق ہونا چاہئیے چاروں بھائیوں کو ڈیمز کی تعمیر کے لئے قربانی دینا ہوگی ‘ہم نے پانی کے مسئلے کو حل کرنا ہے کالا باغ ڈیم نہ بنا تو خیبرپختونخوا زمین کو پانی نہیں مل سکے گا ہمیں ہنگامی اور جنگی بنیادوں پر کام کرنا ہوگا۔ لوگوں کو اکٹھا کریں تاکہ لوگوں کی تجاویز آئیں سب کو مل بیٹھ کر ایشو کے حل کے لئے سوچنا ہوگا۔ اعتزاز احسن نے بتایا کہ ڈیمز کے مخالفین سے بھی بات کرنی ہوگی۔ چیف جسٹس نے کہا کہ جو ڈیم متنازعہ نہیں ان پر فوکس پہلے کیوں نہ کریں۔ ڈیم کی تعمیر کے حوالے سے کچھ نہیں ہوا سیاسی حکومتوں نے دس سال میں ڈیمز کی تعمیر کے لئے کیا گیا۔ ڈیم تو ہر حال میں بننا ہے یہ بتائیں ڈیمز کن جگہوں پر بنیں گے مجھے مسئلے کا حل بتائیں مجھے بندے بتائیں ماہرین کے نام بتائیں میں نے سب کو بلا کر اندر سے کنڈی لگا دینی ہے کم از کم اس مسئلے پر گفت و شنید شروع کرنی چاہئے۔ ایک کمیٹی یا ٹیم تشکیل دینی پڑے گی۔ انجینئر امتیاز نے بتایا کہ ہمیں ایک نہیں بلکہ درجنوں ڈیم بنانے پڑیں گے بدعنوانی کے لئے تھرمل پاور اسٹیشن بنائے گئے بھاشا ڈیم سے کالا باغ سے زیادہ بجلی پیدا ہوگی۔ بدعنوانی کی وجہ سے ڈیموں کی تعمیر نہیں ہوئی نواز شریف حکومت نے ت زائد قیمت پر تھرمل اسٹیشن لگائے۔ چیف جسٹس ثاقب نثار نے کہا کہ ڈیمز کی تعمیر کے لئے ہم سب فنڈز دیں گے ڈیم کی تعمیر کے لئے وکلاء بھی حصہ ڈالیں گے ۔ آئندہ ہفتے کیس کی سماعت روزانہ کی بنیاد پر کریں گے کالا باغ ڈیم کیس کی سماعت ملتوی کردی گئی۔

چیف جسٹس

مزید : صفحہ اول