بہاء الدین زکریا یونیورسٹی 43 سال سے پرو وائس چانسلر کی تعیناتی سے محروم

بہاء الدین زکریا یونیورسٹی 43 سال سے پرو وائس چانسلر کی تعیناتی سے محروم

ملتان(نیوزرپورٹر) بہاء الدین زکریا یونیورسٹی کے قیام کے 43 سال گزرنے کے باوجود’’پرو وائس چانسلر‘‘ کی تعیناتی نہ کی جا سکی(بقیہ نمبر52صفحہ12پر )

،پرو وائس چانسلر نہ ہونے کی وجہ سے یونیورسٹی کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ اس ضمن میں معلوم ہوا ہے کہ یونیورسٹی کا وائس چانسلر سینئر تین پروفیسر کے نام پنجاب حکومت کو بھیجتا ہے ان میں سے گورنر کسی ایک کو پرو وائس چانسلر تعینات کرتا ہے۔ وائس چانسلر کی غیر موجودگی میں پرووائس چانسلر وی سی کے فرائض سرانجام دیتا ہے‘ بی زیڈ یو میں سیاسی مسائل کے باعث 43 سال گزرنے کے باوجود پرووائس چانسلر کی تعیناتی نہیں کی جا سکی ہے ذرائع کا کہنا ہے کہ آج کل وی سی کی غیر موجودگی میں قائمقام وی سی کے کیے جانے والے تمام اقدامات غیر قانونی ہوں گے کیونکہ قائمقام وی سی کے تقرر کا اختیار گورنر کے پاس ہوتا ہے۔ کچھ عرصہ قبل وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر طاہر امین نے قائمقام وائس چانسلر کے لیے تین سینئر پروفیسرز کے نام گورنر پنجاب کو بھجوائے گورنر پنجاب نے سب سے سینئر پروفیسر طارق انصاری کو قائمقام وائس چانسلر تعینات کر دیا جس کے بعد ان کی تعیناتی ایک بڑا مسئلہ بن کرسامنے آیا جس کے بعد قائم مقام کا نام دوبارہ نہیں بھجوایا گیا ذرائع کا کہنا ہے کہ اگر مستقل پرو وائس چانسلر تعینات کر دیا جائے تو یونیورسٹی میں بہت سارے مسائل حل ہو سکتے ہیں۔ جب اس سلسلے میں رجسٹرار سے رابطہ کیا تو انھوں نے کہا کہ اپنی غیر موجودگی میں وی سی اپنی مرضی سے کسی کو بھی اپنا اختیار تفویض کر سکتا ہے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر