ٹکٹوں کی تقسیم: شاہ محمود کیخلاف کارکنوں میں اشتعال‘ الزامات کی بوچھاڑ

ٹکٹوں کی تقسیم: شاہ محمود کیخلاف کارکنوں میں اشتعال‘ الزامات کی بوچھاڑ

ملتان(نیوز رپورٹر)سندھ کے علاقوں تھرپارکر اور عمرکوٹ کی سیٹیں حاصل کرنے کے مخدوم شاہ محمود قریشی نے ملتان کا قومی حلقہ این اے154عبدالقادر گیلانی کی جھولی میں ڈالنے کی (بقیہ نمبر36صفحہ12پر )

مذموم کوشش کی ہے۔ جس کی ہم پرزور مذمت کرتے ہیں۔ این اے154میں ملک احمد حسین ڈیہڑ،پی پی211میں چوہدری خالد جاوید وڑائچ اور پی پی212میں سلیم لابر کی صورت میں جان بوجھ کر کمزور امیدوار دیئے گئے ہیں تاکہ اس حلقہ میں پیر پگارا کے داماد اور سید یوسف رضا گیلانی کے صاحبزاد سید عبدالقادر گیلانی کو فری ہینڈ دیاجاسکے۔اس سازش کو کامیاب نہیں ہونے دیں گے۔دھرنے دینے کے قائل نہ ہیں۔ پارٹی فوری طور پر فیصلے پر نظرثانی کرے بصورت دیگر تحریک انصاف کے امیدوار بھی پینل کی صورت میں اس حلقہ میں الیکشن لڑیں گے اور سیٹ جیت کر دکھائیں گے۔ان خیالات کا اظہار تحریک انصاف کے رہنماؤں ملک اسحاق بُچہ، سیکرٹری اطلاعات جنوبی پنجاب ملک عاصم ڈیہڑ، علی شیر بوسن، ڈسٹرکٹ بار کے صدر حافظ اللہ دتہ کاشف بوسن، ملک محمد اعجاز راں، ملک علی شیر کھنڈ، ملک حاجی غلام قاسم بوسن ودیگر رہنماؤں نے گزشتہ روز ہنگامی پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا۔ پریس کانفرنس کرتے ہوئے رہنماؤں کا مزید کہنا تھا کہ این اے154، پی پی211 اور212میں جو امیدوار دیئے گئے ہیں ان میں1نیب زدہ ہے جبکہ دوصوبائی امیدواروں کا اس حلقے میں کوئی تعلق ہی نہ ہے۔ حلقہ میں5سال سے محنت کررہے ہیں۔ جان بوجھ کر دھوکہ کیاگیا ہے۔ پارٹی کو چھوڑیں گے اور نہ ہی دھرنا دیں گے بلکہ تحریک انصاف میں رہتے ہوئے این اے154، پی پی211اور پی پی212سے بہترین امیدوار سامنے لائیں گے اور الیکشن جیت کر عمران خان کو سیٹیں دیں گے۔انہوں نے کہا کہ پارٹی فوری طورپر اپنے فیصلے پر نظر ثانی کرے اور حلقہ کو سازش کی بھینٹ چڑھنے سے بچایا جائے۔ ایک سوال کے جواب میں رہنماؤں کا کہنا تھا کہ ہم سب اس قومی اور صوبائی حلقوں کے امیدوار تھے پارٹی نے ہم سے مشورہ تک نہ کیا ہے جو مخدوم شاہ محمود قریشی نے کیا اسے من وعن تسلیم کرکے زیادتی کی گئی۔

بوچھاڑ

مزید : ملتان صفحہ آخر