سخا خوٹ،اتمان خیل قومی موومنٹ کے امیدوار متحدہ مجلس عمل کے امیدوار کے حق میں دستبردار

سخا خوٹ،اتمان خیل قومی موومنٹ کے امیدوار متحدہ مجلس عمل کے امیدوار کے حق میں ...

سخاکوٹ(نما ئندہ پاکستان) حلقہ پی کے 19 ملاکنڈ سے اُتمان خیل قومی مومنٹ کے اُمیدوار صابر الرحمان متحدہ مجلس عمل کے نامزد اُمیدوار شیخ القرآن مولانا جمال الدین کے حق میں دستبردار ہو گئے ۔ ایم ایم اے برسراقتدار آکر قوم اُتمان خیل کے لئے الگ تحصیل کے قیام ، بارانی ڈیم بنانے آبنوشی اسکیم اور ٹنل کے تعمیر سمیت دیگر مسائل ترجیحی بنیادوں پر حل کرے گی، قومی جرگہ میں آرٹیکل 62اور 63پر پورا اُترنے والے اُمیدواروں کے حمایت کا فیصلہ کیا تھا اس لئے ایم ایم اے کے اُمیدوارشیخ القرآن مولانا جمال الدین کے حق میں دستبردار ہو رہے ہیں ۔ صوبائی اسمبلی کے نشست سے دستبرداری کا اعلان صابر الرحمان نے ثانی گل ماما اور خان محمد کے ہمراہ متحدہ مجلس عمل کے نامزد اُمیدوارصوبائی اسمبلی پی کے 19ملاکنڈ شیخ القرآن مولانا جمال الدین کے موجودگی میں پریس کلب آفس میں پریس کانفرنس کے دوران کیا ۔ اس موقع پر جماعت اسلامی تحصیل درگئی کے آمیر مولانا محمد طیب ، جنرل سیکرٹری نثار احمد قاضی ،ضلعی سیکرٹری اطلاعات خیر الرحمان ، ممبر تحصیل کونسل قاضی رشید احمد ، جمعیت علماء اسلام کے ضلعی ڈپٹی جنرل سیکرٹری مولانا سلمان تاثیر خان ، الخدمت ملاکنڈ کے صدر محمد طاہر ،الخدمت تحصیل درگئی کے صدر محمد افضل خان ،حاجی رضوان اﷲ ، حبیب اللہ خان ،یوتھ ونگ کے سابق ضلعی صدر جاسم علی ایڈوکیٹ ،محمد زمان ، وقار احمد ایڈوکیٹ ،فضل وہاب اور جنرل کونسلر عمر فاروق سمیت دیگر قائدین بھی موجود تھیں ۔دستبردار ہونے والے صابر الرحمان نے کہا کہ قوم اُتمان خیل کے کیساتھ مشاورت کے بعد ایم ایم اے کے اُمیدوار کے حمایت کافیصلہ کیا ہے کیونکہ ہمیں پوری اُمید ہے کہ ملاکنڈ کے تینوں نشستوں پر ایم ایم اے کے اُمیدوار بھاری اکثریت سے کامیاب ہونگے اور اقتدار میں آکر قوم اُتمان خیل کے گیس ، بجلی ، روڈز اور پانی کے اسکیموں سمیت دیگر مسائل ترجیحی بنیادوں پر حل کرینگے ۔ پریس کانفرنس کے دوران متحدہ مجلس عمل کے ضلعی صدر اور نامزد اُمیدوار شیخ القرآن مولانا جمال الدین نے کہا کہ ہمیں علاقہ خانوڑی ، کوٹ ، ٹوٹئی ، سیلئے پٹے سمیت حلقے کے دیگر دورفتادہ علاقوں کے عوام کے مسائل کا بخوبی احساس ہے کیونکہ ملاکنڈ سے منتخب ہونے والے نمائندوں نے یہاں کے عوام کے مسائل کے حل کے لئے کسی قسم کے سنجیدہ اقدامات نہیں کئے جس کی وجہ سے یہاں کے عوام اب بھی تعلیم ، صحت سمیت بنیادی سہولیات سے محروم ہیں جبکہ لوگ اب بھی کئی کلومیٹر دور سے پانی لانے پر مجبور ہیں حالانکہ ایم ایم اے کے سابقہ حکومت نے ملاکنڈ تھری اور انڈسٹریل اسٹیٹ جیسے بڑے منصوبے مکمل کئے ہیں جس سے ملاکنڈ کو کروڑوں روپے رائیلٹی مل رہی ہے۔انہوں نے کہا کہ حلقے کو ترقی کی راہ پر گامزن کرنے کے لئے ہمارے پاس ماسٹر پلان موجود ہے جس پر ابھی سے کام جاری ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اقتدار میں آکر کرپشن ، لوٹ مار ،اقرباء پروری اور سرکاری اداروں سے سیاسی مداخلت ختم کرینگے ۔ مولانا جمال الدین نے کہا کہ موجودہ ایم ایم اے گذشتہ ایم ایم اے سے کئی گنا زیادہ مضبوط اور فعال ہے اور انشاء ا ﷲ عام انتخابات میں متحدہ مجلس عمل کلین سویپ کرتے ہوئے حکومت بنائے گی جو ملک میں حقیقی شرعی نظام کے نفاذ کے لئے بھر پور جدوجہد کریگی ۔انہوں نے کہا کہ ملاکنڈ میں الیکشن کمیشن آف پاکستان کے ضابطہ اخلاق کی مکمل طور پر خلاف ورزی ہورہی ہے ۔

مزید : پشاورصفحہ آخر