انجمن تاجران کی ملاکنڈ ڈویژن کی آزادانہ حیثیت چھیڑنے پر احتجاج کی دھمکی

انجمن تاجران کی ملاکنڈ ڈویژن کی آزادانہ حیثیت چھیڑنے پر احتجاج کی دھمکی

سخاکوٹ(نما ئندہ پاکستان) انجمن تاجران ملاکنڈڈویژن کے تمام بازاروں کے صدورنے دھمکی دہے کہ اگرحکومت نے ملاکنڈڈویژن کے آزادنہ حیثیت کو چھیڑا اورٹیکس لگانے کی کوشش کی توہم بھر پور احتجاجی تحریک شروع کریں گے۔ ملاکنڈڈویژن ایک پسماندہ علاقہ ہے اوریہاں کے عوام دووقت کے روٹی کیلئے ترس رہے ہیں تو ایسے میں ٹیکس کا اضافی بوجھ کیسے برداشت کرینگے ۔ احتجاج کااعلان انجمن تاجران ملاکنڈڈویژن کے صدرحاجی شاکراللہ خان، جنرل سیکرٹری ملک دلنوازخان اورڈویژن کے مختلف بازاروں سخاکوٹ ،دیر،تیمرگرہ ،سوات ،بونیر،سواڑی وغیرہ کے صدورنے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔انہوں نے کہاکہ حکومت نے ایک سال قبل بھی انکم ٹیکس کے نام پرملاکنڈڈویژن کے عوام پرٹیکس لگانے کی کوشش کی تھی مگرتاجربرادری اورعوام نے بھر پور حتجاجی تحریک چلا کر اس فیصلے کو مسترد کیا تھا لیکن بد قسمتی سے ملاکنڈڈویژن کے سابق ممبران اسمبلی نے غریب عوام کے ساتھ ظلم اورناانصافی کرکے سینٹ قومی اورصوبائی اسمبلی میں بل پاس کرائی ۔انہوں نے کہاکہ ہم مولانافضل الرحمان اورمحمود خان اچکزئی کوخراج تحسین پیش کرتے ہیں کہ انہوں نے اسمبلی کے فلور پرقبائل کے عوام کے حقوق کیلئے اوازبلندکردی مگر دیگرپارٹیوں کے راہنماؤں نے قبائل کے نا انصافی کی ۔انہوں نے کہاکہ نگران وزیراعظم اورچئیرمین سینٹ کاتعلق بھی پسماندہ علاقوں سے ہیں اس لئے ہم ان سے توقع رکھتے ہیں کہ وہ ملاکنڈڈویژن کے عوام کے ساتھ ظلم اورناانصافی کانوٹس لیکرملاکنڈکے غریب عوام کواحتجاج کرنے پرمجبورنہیں کرینگے۔ انہوں نے کہاکہ اگرحکومت نے اپنافیصلہ واپس نہ لیاگیاتوبھر پور احتجاجی تحریک شروع کرینگے ۔

مزید : پشاورصفحہ آخر