” دانیال عزیز کو جس قانون کے تحت سزا دی گئی وہ تو ۔۔۔ “ معروف وکیل عرفان قادر نے ایسا انکشاف کردیا کہ چیف جسٹس کا منہ کھلا کا کھلا رہ جائے گا

” دانیال عزیز کو جس قانون کے تحت سزا دی گئی وہ تو ۔۔۔ “ معروف وکیل عرفان قادر ...
” دانیال عزیز کو جس قانون کے تحت سزا دی گئی وہ تو ۔۔۔ “ معروف وکیل عرفان قادر نے ایسا انکشاف کردیا کہ چیف جسٹس کا منہ کھلا کا کھلا رہ جائے گا

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) سابق اٹارنی جنرل آف پاکستان عرفان قادر کا کہنا ہے کہ دانیال عزیز کو جس قانون کے تحت سزا سنائی گئی ہے وہ بہت پہلے ختم ہوگیا تھا۔

دانیال عزیز نااہلی کیس کے فیصلے پر اپنا تجزیہ دیتے ہوئے عرفان قادر نے کہا کہ یہ ایسا فیصلہ ہے جس کا کسی کو پتا ہی نہیں ہے کیونکہ میڈیا میں اس کے قانونی پہلوﺅں کو کبھی زیر غور لایا ہی نہیں گیا۔ دانیال عزیز کو جس قانون کے تحت سزادی گئی ہے وہ موجود ہی نہیں ہے۔ انہیں2003 کے آرڈیننس کے تحت سزا دی گئی ہے لیکن اس قانون کو ختم کردیا گیا تھا۔ اس سلسلے کا آخری قانون 2012 میں آیا تھا لیکن افتخار چوہدری نے اسے ختم کردیا تھا اگر 2012 کا قانون ختم بھی کردیں تو بھی 2003 کا قانون بحال نہیں ہوسکتا۔

عرفان قادر نے کہا کہ سپریم کورٹ نے خود ہی قانون چننا شروع کردیے ہیں سپریم کورٹ اپنا قانون خود نہیں چن سکتی کیونکہ قانون وہی ہے جو پارلیمنٹ دے گی ۔ اگر قانون بھی اپنی مرضی کے اٹھانے شروع کردیے تو اگلے پانچ سال بھی سپریم کورٹ کی ہی حکومت ہوگی ۔ گزشتہ دس سال کے دوران انتظامیہ کے معاملات میں جس طرح مداخلت کی گئی ہے وہ درحقیقت سپریم کورٹ کے ججز کی ڈیفیکٹو حکومت رہی ہے۔

مزید : قومی /سیاست /علاقائی /اسلام آباد