کیوں نہ نجی سکولوں کو سرکاری تحویل میں لیں گے ؟،چیف جسٹس نے گرمی کی چھٹیوں کی فیس وصول کرنیکا فیصلہ معطل کردیا

کیوں نہ نجی سکولوں کو سرکاری تحویل میں لیں گے ؟،چیف جسٹس نے گرمی کی چھٹیوں کی ...
کیوں نہ نجی سکولوں کو سرکاری تحویل میں لیں گے ؟،چیف جسٹس نے گرمی کی چھٹیوں کی فیس وصول کرنیکا فیصلہ معطل کردیا

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)سپریم کورٹ نے گرمیوں کی چھٹیوں کی فیس وصولی کا ہائیکورٹ کا فیصلہ معطل کردیا۔

چیف جسٹس ثاقب نثار نے نجی سکولوں کو سرکاری تحویل میں لینے کا عندیہ دیتے ہوئے کہا کہ کیوں نہ نجی سکول سرکاری تحویل میں لیں گے ،اٹارنی جنرل معاونت کریں ۔

تفصیلات کے مطابق چیف جسٹس پاکستا ن کی سربراہی میں بنچ نے خیبرپختونخوا میں نجی سکول رجسٹریشن کیس کی سماعت کی ،چیف جسٹس ثاقب نثار نے گرمیوں کی چھٹیوں کی فیس لینے کا فیصلہ معطل کرتے ہوئے کہا کہ اس طرح کے عبوری حکم جاری کرنے کا اختیارنہیں،ہائیکورٹ تمام فریقین کو سن کر ازسرنوفیصلہ کرے،چیف جسٹس پاکستان نے کہا کہ کیس کی فیصلے کیلئے نیا بنچ تشکیل دیا جائے ،فیصلہ جج کی ذہنیت کو ظاہر کرتا ہے ،ہم ہائیکورٹ کا فیصلہ دیکھ کر حیران ہیں۔

چیف جسٹس پاکستان نے اٹارنی جنرل سے مکالمہ کرتے ہوئے کہا کہ کیوں نہ نجی سکول سرکاری تحویل میں لیں گے ،اٹارنی جنرل معاونت کریں،

چیف جسٹس ثاقب نثار نے کہا کہ سرکاری تحویل میں لینے پر کوئی پابندی نہیں ،تعلیم کے معاملے پر عدالت کمیشن قائم کر چکی ہے ، حکومت کی نااہلی ہے کہ تعلیم پر توجہ دی نہیں دی جا رہی ،انہوں نے کہا کہ جائزمنافع لیں لیکن فی بچہ 40 ہزارکہاں کاانصاف ہے،اتنی مہنگی تعلیم ہے توعدالت کیوں جائزہ نہ لے ،انہوں نے کہا کہ یہ کیا بات ہوئی جو بچہ فیس نہیں دے سکتا وہ داخلہ نہیں لے سکتا۔

مزید : اہم خبریں /قومی /علاقائی /اسلام آباد