خواجہ سعد رفیق انتخابی مہم چلانے اپنے حلقے میں گئے تو وہ کام ہوگیا جوانہوں نے کبھی خوابوں میں بھی نہ سوچا تھا

خواجہ سعد رفیق انتخابی مہم چلانے اپنے حلقے میں گئے تو وہ کام ہوگیا جوانہوں نے ...
خواجہ سعد رفیق انتخابی مہم چلانے اپنے حلقے میں گئے تو وہ کام ہوگیا جوانہوں نے کبھی خوابوں میں بھی نہ سوچا تھا

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان کے عوام میں بھی سیاسی شعور بیدار ہوچکاہے اور اس کا ایک ثبوت یہ بھی ہے کہ اب سیاستدانوں کو اپنے حلقوں میں عوام کے سوالات کے جواب بھی دیناپڑتے ہیں اور ایسا ہی کچھ خواجہ سعد رفیق کے ساتھ بھی ہوا لیکن جواب دینے کی بجائے وہ موبائل فون بند کرنے پر اصرار کرتے رہے اور بات گول کرنے میں کامیاب ہوگئے۔

تفصیلات کے مطابق خواجہ سعد رفیق اپنے حلقے این اے 131میں انتخابی مہم کے سلسلے میں ایک کارنر میٹنگ کیلئے آئے تو ایک نوجوان نے ان سے سوالات کرنا شروع کردیئے۔ نوجوان کاکہناتھاکہ وہ حلقے کا ووٹر ہے ، اس کا کسی سیاسی جماعت سے تعلق نہیں تاہم وہ اپنے مستقبل کے حوالے سے سوال کرنا چاہتا ہے ، مسلم لیگ ن نے حکومت کی ہے ، سارے میگاپراجیکٹ لگائے ہیں، اس ملک ، اس علاقے اور پورے لاہور میں 2025ءمیں پانی ختم ہوجائے گا لیکن اس کیلئے ن لیگ کی حکومت نے کیا اقدامات کیے؟ اس کو جواب دینے کی بجائے خواجہ سعد رفیق جواب گول کرگئے اور پھر موبائل آف کریں، موبائل آف کریں کی گردان کرتے رہے اور بالآخر شور تھمنے پر تقریرشروع کردی۔

نوجوان کے سوال پر مشتمل خواجہ سعد رفیق کی یہ ویڈیو سوشل میڈیا پر شیئرہوئی تو کی بورڈ واریئرز بھی میدان میں آگئے اورعمران نے لکھاکہ ’سوال سے نہیں صاحب، موبائل سے ڈرلگتاہے ‘۔

ایک اور صارف نے لکھاکہ ’خواجہ صاحب موبائل کا سوال سے کیا تعلق؟ آپ لوگوں کو تو بہت شوق تھا عوامی عدالت کا، اب پریشانی کیسی ۔ ۔ ۔؟‘

گل کچھ زیادہ ہی سیاستدانوں سے ناراض دکھائی دیئے اور لکھا کہ ’کعبہ کس منہ سے جاﺅگے غالب ۔۔۔“

فاروقی نے لکھاکہ ’ بے ضمیر سیاست دان اب موبائل سے ایسا ڈرنے لگے ہیں کہ شائد بندوق کی گولی سے بھی نہ ڈرتے ہوں ۔ ۔ ۔“

زینت نے لکھاکہ ’بڑا دلیر بنا پھرتا ہے ، ایک موبائل سے ڈرتا ہے‘۔

مزید : قومی