تھر کی عوام کی خدمت ترقی وخوشحالی کا جذبہ لیکر میدان میں آئے ہیں: قاسم سراج سومرو

تھر کی عوام کی خدمت ترقی وخوشحالی کا جذبہ لیکر میدان میں آئے ہیں: قاسم سراج ...
تھر کی عوام کی خدمت ترقی وخوشحالی کا جذبہ لیکر میدان میں آئے ہیں: قاسم سراج سومرو

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

عمرکوٹ (سید ریحان شبیر)دنیا کے تیسرے بڑے ریگستان صحرائے تھر میں الیکشن کا رنگ جمنے لگا امیدواروں نے ووٹرز کی توجہ حاصل کرنے کے لیے نت نئے طریقے ڈھونڈ نکالے ننگرپارکر کے صوبائی حلقے پی ایس "55"پر پیپلزپارٹی کے امیدوار قاسم سراج کے حامیوں نے تھر میں سیاسی ماحول کو رنگارنگ اور ووٹرز میں جوش پیدا کردیا ہے ۔تفصیلات کے مطابق ضلع تھرپارکر میں پیپلزپارٹی اور پاکستان تحریک انصاف اور گرینڈ ڈیموکریٹک الائنس کے حتمی امیدواروں کے اعلان کےبعد صحرائے تھر کے ریگستان میں سیاسی میلہ سجنے لگا امیدواروں نے ناراض دوستوں کو منانے کا اور لوگوں کی ھمدردیاں حاصل کرنے کے جتن شروع کردیے سیاسی جماعتوں اور امیدواروں کے سپورٹروں کی جانب سے ووٹرز کےلیے خصوصی پارٹی ترانے نغمے امیدواروں پر نغمے ترانے کی آڈیو اور ویڈیو نے تھر کے سیاسی ماحول میں ایک رنگ بھر دیا ہے اور پھر نہلے پر دہلا تھر ننگرپارکر کی صوبائی نشست پر قاسم سراج سومرو کے ایک حامی کی جانب سے ایک خصوصی ٹی شرٹ تیار کرائی گی ہے جس میں قاسم سراج کی تصویر اور انتخابی نشان تیر نمایاں ہے جبکہ قاسم سراج سومرو کے ایک اور حامی سپورٹر کی جانب سے ایک کیپ ٹوپی تیار کرائی گئی ہے اس کے علاوہ تھر کو مختلف سیاسی جماعتوں کے پینافلیکس بینرز پوسٹرز اور پارٹی پرچموں سے سجا دیا گیا ہے اور تھر میں امیدواروں کےحامیوں نے فیسبک اور سوشل میڈیا پر بھی سیاسی ماحول گرما رکھا ہے تھرپارکر ضلع میں اصل مقابلہ پیپلزپارٹی اور پاکستان تحریک انصاف گرینڈ ڈیموکریٹک الائنس کے مشترکہ امیدواروں کے درمیان ہے تھر میں پیپلزپارٹی نےاپنے امیدوار فائنل کرکے ٹکٹ جاری کردیے ہیں جبکہ پاکستان تحریک انصاف اور جی ڈی ای مشترکہ طور پر پیپلزپارٹی سے مقابلہ کررہے ہیں ننگرپارکر سے پیپلزپارٹی کے نوجوان اعلیٰ تعلیم یافتہ قاسم سراج سومرو کا کہنا کہ وہ تھر کی عوام کی خدمت ترقی وخوشحالی کا جذبہ لیکر میدان میں آئے ہیں اللہ تعالی نے مجھے تھر کی عوام کی خدمت کا موقع دیا تو وہ تھر اور تھری باشندوں کےلیے خصوصی پیکج لایا جائے گا ضلع تھرپارکر میں قومی اسمبلی کی نشست "NA221"پر اصل مقابلہ پاکستان تحریک انصاف کے وائس چیرمین مخدوم شاہ محمود قریشی اور پیپلزپارٹی کے پیر نور محمد شاہ جیلانی کے درمیان اور تھر میں قومی اسمبلی کی دوسری نشست" NA222"پر پی ٹی آئی اور جی ڈی ای کے مشترکہ امیدوار ارباب ذکا اللہ اور پیپلزپارٹی کے مہیش کمار ملانی کے درمیان مقابلہ ہے جبکہ تھر کی صوبائی نشست پی ایس "54"پر پیپلزپارٹی کے دوست علی راہموں اور جی ڈی ای تحریک انصاف کے مشترکہ امیدوار عبدالرزاق راہموں کے درمیان مقابلہ ہے تھر کے صوبائی حلقے پی ایس  "55"پر پیپلزپارٹی کے قاسم سراج سومرو اور جی ڈی ای اور تحریک انصاف کے مشترکہ امیدوار ارباب انور کے درمیان مقابلہ ہے جبکہ تھر کے صوبائی حلقے پی ایس "56"پر پیپلزپارٹی کے فقیر شیر محمد بلانی اور جی ڈی ای تحریک انصاف کے مشترکہ امیدوار ارباب توگاچی کےدرمیان مقابلہ ہے جبکہ تھر کے صوبائی حلقے پی ایس "57"پر پیپلزپارٹی کے ارباب لطف اللہ اور تحریک انصاف اور جی ڈی ای کے مرکزی رہنما اور سابق وزیراعلیٰ سندھ ڈاکٹر ارباب غلام رحیم کے درمیان انتہائی سخت مقابلہ ہے ۔

 

مزید : علاقائی /سندھ /عمرکوٹ