”شفاف الیکشن کے انعقاد پر سوالیہ نشان لگ گیا ہے کیونکہ ۔۔۔“شہباز شریف بھی پھٹ پڑے

”شفاف الیکشن کے انعقاد پر سوالیہ نشان لگ گیا ہے کیونکہ ۔۔۔“شہباز شریف بھی ...
”شفاف الیکشن کے انعقاد پر سوالیہ نشان لگ گیا ہے کیونکہ ۔۔۔“شہباز شریف بھی پھٹ پڑے

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن ) مسلم لیگ ن کے صدر شہبازشریف نے کہا ہے کہ ن لیگ اپنے امیدواروں اور مخالف سیاسی جماعتوں کے امیدواروں کی نا اہلیوں کو درست نہیں سمجھتی اور قمرالاسلام کی گرفتاری سے آزادانہ اور شفاف الیکشن کے انعقاد پر سوالیہ نشان لگ گیا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ کہ قمر الاسلام کی انتخابی مہم کے دوران گرفتاری قابل مذمت ہے، مجھے اس گرفتاری پر تشویش ہے،، اس طرح سیاسی قیادت کو انتخابی عمل سے باہر رکھنا خوش آئندہ نہیں ہے، نیب کو یہ تاثر ختم کرنا چاہیے کہ مسلم لیگ (ن) اس کے نشانے پر ہے۔

انہوں نے کہا کہ عوام کی عدالت ہی سب سے بڑی عدالت ثابت ہوگی، آئین اور قانون کے تحت عوامی عدالت میں پیش ہو چکے ہیں، عوام کی عدالت کو اپنا فیصلہ کرنے دیا جائے کیونکہ جمہوریت کی روح کے مطابق عوام کی عدالت ہی سب سے بڑی عدالت ثابت ہوگی۔

شہباز شریف نے کہا کہ (ن) لیگ کے خلاف انتقامی کارروائیاں انتخابی مہم کو نقصان پہنچانے کی کوشش ہے، ایسی کارروائیوں نے شفاف انتخابات کے انعقاد پر شکوک و شبہات پیدا کردیئے ہیں۔سابق وزیراعلیٰ کا کہنا تھا کہ ملکی اداروں کو آئین اور قانون کے دائرے میں رہ کر جمہوریت کی مضبوطی کے لیے کام کرنا چاہیے، کسی بھی ادارے کا ایسا اقدام جوجمہوریت کو نقصان پہنچائے، وہ قابل تحسین نہیں ہے۔

مزید : قومی