ہوائی جہاز میں ایک ایسا مسافر آگیا کہ باقی مسافر اسے دیکھ کر اُلٹیاں کرنے لگے، اور پھر دیکھتے ہی دیکھتے اس کی موت ہوگئی کیونکہ۔۔۔

ہوائی جہاز میں ایک ایسا مسافر آگیا کہ باقی مسافر اسے دیکھ کر اُلٹیاں کرنے ...
ہوائی جہاز میں ایک ایسا مسافر آگیا کہ باقی مسافر اسے دیکھ کر اُلٹیاں کرنے لگے، اور پھر دیکھتے ہی دیکھتے اس کی موت ہوگئی کیونکہ۔۔۔

  

ماسکو(مانیٹرنگ ڈیسک) روسی سیاحوں سے بھرا ایک ہوائی جہاز سپین کے جزیرے کینیری سے واپس ماسکو جا رہا تھا، اس میں ایک ایسا مسافر سوار ہو گیا کہ اسے دیکھ کر باقی مسافر الٹیاں کرنے لگے اور پھر دیکھتے ہی دیکھتے اس شخص کی موت واقع ہو گئی۔ میل آن لائن کے مطابق یہ شخص کوئی اور نہیں بلکہ روس کا 58سالہ راک سٹاراینڈرے سوچلین تھا، جو ایسی خوفناک انفیکشن کا شکار تھا کہ انفیکشن کا وائرس اس کے گوشت کو کھا رہا تھا۔ اس کے جسم پر جا بجا زخم تھے جو سڑ چکے تھے اور ان سے انتہائی بھیانک بدبو آ رہی تھی۔اس بدبو کی وجہ سے باقی مسافروں کی حالت اس قدر خراب ہوئی کہ اکثر کو الٹیاں آنے لگیں اور کچھ تو بے ہوش ہونے لگے۔

رپورٹ کے مطابق جب عملے نے پائلٹ کو اس صورتحال سے آگاہ کیا تو اس نے جہاز کو پرتگال میں ہنگامی طور پر لینڈ کر دیا جہاں اینڈرے کو ہسپتال پہنچایا گیا لیکن وہ جانبر نہ ہو سکا اور اس موذی انفیکشن کے باعث موت کے منہ میں چلا گیا۔ بتایا گیا ہے کہ جہاز کے عملے نے اینڈرے کو ٹوائلٹ میں بند کرکے باقی مسافروں سے الگ کرنے کی کوشش بھی کی تاہم بدبو وہاں سے بھی آتی رہی جس پر جہاز کی ہنگامی لینڈنگ کا فیصلہ کیا گیا۔ اینڈرے روس میں راک میوزک کے بانیوں میں سے ایک خیال کیے جاتے ہیں اور روس کے چوٹی کے گٹار پلیئر تھے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس /بین الاقوامی