وہ مسلمان جس کے جسم پر ایک ایسی چیز ہے کہ انٹرنیٹ پر مسلمان اس سے سب سے زیادہ نفرت کرتے ہیں

وہ مسلمان جس کے جسم پر ایک ایسی چیز ہے کہ انٹرنیٹ پر مسلمان اس سے سب سے زیادہ ...
وہ مسلمان جس کے جسم پر ایک ایسی چیز ہے کہ انٹرنیٹ پر مسلمان اس سے سب سے زیادہ نفرت کرتے ہیں

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

سڈنی(مانیٹرنگ ڈیسک) آسٹریلیا کا مسلمان نوجوان یاکی بوائے اپنے لگژری لائف سٹائل کی انٹرنیٹ پر تشہیر کی وجہ سے دنیا بھر میں مشہور ہو چکا ہے۔ یاکی بوائے سوشل میڈیا پر خود کو ’مسلم سولجر‘قرار دیتا ہے لیکن اس کے جسم پر ایک ایسی چیز بنی ہوئی ہے جس کی وجہ سے دنیا بھر کے مسلمان اس سے نفرت کرتے ہیں۔ میل آن لائن کے مطابق خود کو مسلمان مجاہد کہلانے والے اس نوجوان نے اپنے پورے جسم پر ٹیٹو بنوا رکھا ہے۔ اس کا سارا جسم گردن سے لے کر پیروں تک اس ٹیٹو سے ڈھکا ہوا ہے۔جب اس سے سوال کیا جاتا ہے کہ وہ خود کو مسلمان بھی کہتا ہے اور اپنے پورے جسم پر ٹیٹو بھی بنوارکھے ہیں تو وہ جواب دیتا ہے کہ ”خدا انسان کے ظاہری حلیے کو نہیں بلکہ اس کے دل کو دیکھتا ہے۔ میرا دل صاف ہے اس لئے مجھے کوئی پشیمانی نہیں ہے۔“

آسٹریلوی شہر سڈنی کا رہائشی یاکی بوائے ہر بار کسی نئے روپ میں سوشل میڈیا پر ہلچل مچاتا ہے۔ رپورٹ کے مطابق انڈر ورلڈ کا ڈان باربرو اس شخص کا قریبی دوست تھا، جسے 2016ءمیں دو نقاب پوشوں نے سر میں گولی مار کر ہلاک کردیا تھا۔ ڈیلی میل آسٹریلیا پر جب ان دونوں کے تعلق کے بارے میں خبر سامنے آئی تو یاکی بوائے نے خود کو باربرو سے دور کرلیا۔ اس کا کہنا تھا کہ اس کی زندگی کی سب سے بڑی غلطی باربرو کے ساتھ دوستی تھی۔کچھ عرصہ قبل اس نے ہم جنس پرستوں کے ایک میلے میں بھی شرکت کی تھی اور اس میلے میں بنائی گئی تصاویر اپنے انسٹاگرام پر پوسٹ کی تھیں۔ جس پر اسے ایک بار پھر شدید تنقید کا سامنا کرنا پڑا۔ اسی اکاﺅنٹ پر، جہاں اسے 62ہزار لوگوں نے فالو کر رکھا ہے، وہ اپنی لگژری کاروں اور دیگر قیمتی اشیاءکی نمائش بھی کرتا رہتا ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس /بین الاقوامی