بجٹ میں سندھ کا حق نظر نہیں آرہا، ہم نے وعدے نبھائے، وفاق بھی پورے کرے: خالد مقبول صدیقی

بجٹ میں سندھ کا حق نظر نہیں آرہا، ہم نے وعدے نبھائے، وفاق بھی پورے کرے: خالد ...

  

اسلام آباد(آئی این پی)ایم کیو ایم پاکستان کے کنوینئر اور وفاقی وزیر برائے انفارمیشن ٹیکنالوجی خالد مقبول صدیقی نے سندھ کے شہری علاقوں کو آفت زدہ علاقے قرار دینے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ بجٹ میں سندھ کے شہری علاقوں کا جو حق تھا وہ ملتا ہوا نظر نہیں آیا، ابھی بھی وقت ہے وفاق کو سندھ کے شہری علاقوں کے ساتھ ہونے والی زیادتیوں پر نظر ڈالنی چاہیئے،ہم نے اپنے وعدے نبھائے ہیں وقت ہے وفاق بھی اپنے وعدے نبھائے۔جمعرات کو پارلیمنٹ ہاس کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے خالد مقبول صدیقی نے کہا کہ بلوچستان کی محرومیوں کے ازالے کے لیئے جو کمیٹی بنائی گئی ہے ہم اس کا خیر مقدم کرتے ہیں انہوں نے کہا کہ سندھ کے شہری علاقوں کی جانب بھی نظر ڈالنی چاہیئے،کراچی سمیت سندھ کے شہری علاقوں میں گزشتہ دس گیارہ سالوں سے جو معاشی دہشت گردی ہورہی ہے ایوان کو اس کا بھی سنجیدگی کا جائزہ لینا چاہیئے،سندھ کے شہری علاقوں کو آفت زدہ علاقے قرار دینا چاہیئے،اس بجٹ میں سندھ کے شہری علاقوں کا جو حق تھا وہ ملتا ہوا نظر نہیں آیا ابھی بھی وقت ہے وفاق کو سندھ کے شہری علاقوں کے ساتھ ہونے والی زیادتیوں پر نظر ڈالنی چاہیئے، شہری علاقوں کا گاؤں سے برا حال ہے،شہری علاقوں میں غربت 50 فیصد سے زیادہ ہے، خالد مقبول صدیقی نے کہا کہ سندھ کا بجٹ تو مکمل طور پر شہری علاقوں کا دشمن بجٹ ہے، سندھ کے اہم ہسپتال این جی او کے حوالے کر دیئے گئے ہیں، انہوں نے کہا کہ ہم حکومت میں اس لیئے شامل ہیں کہ اپنے لوگوں کے دکھ درد ارباب اختیار تک پہنچا سکیں،ہم نے اپنے وعدے نبھائے ہیں وقت ہے وفاق بھی اپنے وعدے نبھائے،ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ اگر ہم اپنے لوگوں کے دکھ درد اور مسائل کو حل کرنے میں حصہ ہی نہیں بنیں تو ایوان میں بیٹھنا بھی بے معنی ہو گا۔

ایم کیو ایم

مزید :

علاقائی -