25 سالہ نوجوان نے ایسا لباس پہننا شروع کردیا کہ شادی کی خواہشمند نوجوان لڑکیوں کی لمبی لائن لگ گئی

25 سالہ نوجوان نے ایسا لباس پہننا شروع کردیا کہ شادی کی خواہشمند نوجوان ...
25 سالہ نوجوان نے ایسا لباس پہننا شروع کردیا کہ شادی کی خواہشمند نوجوان لڑکیوں کی لمبی لائن لگ گئی

  

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) کہتے ہیں کہ لباس جدید فیشن سے ہم آہنگ ہو تبھی اچھا لگتا ہے لیکن اس برطانوی نوجوان نے اس تاثر کو غلط ثابت کر دیا ہے جو 19ویں صدی والا قدیم لباس پہنتا ہے اور اس سے شادی کی خواہش مند لڑکیوں کی لمبی قطار لگ گئی ہے۔ میل آن لائن کے مطابق برطانوی شہر ہوو کے رہائشی اس 25سالہ نوجوان کا نام زیک پنسینٹ ہے۔ اس نے 14سال کی عمر سے جینز اور دیگر عہدحاضر کے ملبوسات ترک کر دیئے اور برطانیہ کے ریجنسی دور کے ملبوسات پہننے شروع کر دیئے۔ یہ دور 1811ءسے شروع ہوا تھا۔اس دور کی اشرافیہ جس طرح کا لباس پہنتی تھی، زیک گزشتہ 9سال سے ویسا ہی لباس پہن رہا ہے۔ اس کا کہنا ہے کہ یہ لباس پہننے کی وجہ سے وہ جہاں جاتا ہے لوگوں کی توجہ کا مرکز بن جاتا ہے۔ راہ چلتے لڑکیاں اسے روکتی اور اس کے ساتھ سیلفی بنواتی ہیں اور اب تک درجنوں لڑکیاں اسے شادی کی پیشکش بھی کر چکی ہیں۔ اس لباس کی وجہ سے ہی سوشل میڈیا پر بھی وہ بہت مقبول ہو چکا ہے اور انسٹاگرام پر اسے 40ہزار سے زائد لوگ فالو کر چکے ہیں۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -