پاکستان کا کرتار پور راہداری کل سے دوبارہ کھولنے کا اعلان،بھارت کا انکار

پاکستان کا کرتار پور راہداری کل سے دوبارہ کھولنے کا اعلان،بھارت کا انکار

  

اسلام آباد(سٹاف رپورٹر، مامنیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں) پاکستان نے 29 جون سے کرتار پور راہداری کھولنے کا اعلان کردیا۔اس سلسلے میں ترجمان دفتر خارجہ عائشہ فاروقی کا کہنا ہے کہ پاکستان نے بھارت کو کرتار پور راہداری 29 جون سے کھولنے پر آمادگی سے آگاہ کر دیا ہے۔دوسری جانب وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے اپنے بیان میں کہا کہ ہم بھارت کو 29 جون کو کرتار پور راہداری کھولنے سے متعلق اپنی آمادگی سے آگاہ کر رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ دنیا بھر میں جیسے عبادت گاہیں کھل رہی ہیں ویسے ہی پاکستان کرتار پور راہداری کھولنے کی تیاری کر رہا ہے۔وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ مہاراجہ رنجیت سنگھ کی برسی پر کرتار پور راہداری کھولنے کی تیاری ہے۔اس سے پہلے یہ کوریڈور 16 مارچ کو کوڈ 19 واقعات کی بڑھتی ہوئی تعداد کی وجہ سے عارضی طور پر بند کردیا گیا تھا۔ اس بات کو یقینی بنانے کے لئے کہ ضروری احتیاطی تدابیر اختیار کی جائیں، پاکستان نے ہندوستان کو دوبارہ کھولنے کے لئے معیاری آپریٹنگ طریقہ کار (ایس او پیز) پر تبادلہ خیال کرنے کی دعوت دی ہے۔دوسری طرف بھارت نے بھارت نے سکھوں کے مذہبی مقام کرتار پور گوردوارہ تک جانے والی سرحدی راہداری کھولنے سے انکار کردیا۔پاکستان نے اپنی طرف سے 29 جون کو کرتار پور راہداری کھولنے کا اعلان کیا تھا اور اس حوالے سے بھارت کو بھی آگاہ کردیا گیا تھا تاہم اب بھارت نے کرتارپور راہداری کھولنے سے انکار کردیا ہے۔۔رپورٹس کے مطابق بھارتی حکام کا کہنا ہے کہ کورونا وائرس کی وجہ سے حفاظتی اقدامات کے تحت سرحدوں پر آمد و رفت معطل ہے۔بھارتی حکومت کے ذرائع کا کہنا ہے کہ اس حوالے سے کوئی بھی فیصلہ محکمہ صحت کے حکام اور متعلقہ اداروں کی مشاورت سے کیا جائے گا۔ ساتھ ہی بھارت کا یہ بھی کہنا ہے کہ دو دن کے نوٹس پر راہداری کھولنا ممکن نہیں کیوں کہ معاہدے کے تحت بھارت یاتریوں کی تفصیلات سفر سے 7 روز قبل پاکستان کو دینے کا پابندی ہے۔

راہداری

مزید :

صفحہ اول -