پیٹرول میں اضافہ، عالمی مارکیٹوں میں قیمت کابڑھنا، فردوس شمیم

  پیٹرول میں اضافہ، عالمی مارکیٹوں میں قیمت کابڑھنا، فردوس شمیم

  

کراچی(اسٹاف رپورٹر)سندھ اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر فردوس شمیم نقوی نے کہا ہے فردوس شمیم نقوی پیٹرول کی قیمت میں اچانک اضافہ کہ وجہ عالمی مارکیٹوں میں قیمت کابڑھنا ہے،ابھی ریجن میں سب سے سستا پیٹرول ہمارا ہے۔عالمی سطح پر ایک سو بارہ فیصد قیمت بڑھی ہے،وہ ہفتہ کواپوزیشن کی دیگر جماعتوں کے رہنماؤں کے ہمراہ سندھ اسمبلی میں پریس کانفرنس سے خطاب کررہے تھے،انہوں نے کہا کہ ذخیرہ اندوزی سے بچانے کے لیے پیٹرول کی قیمتیں پہلے بڑھانی پڑی۔تحریک انصاف واحد جماعت ہے جس میں موروثی جماعت نہیں ہے۔ہمارا لیڈر حق اور سچ کی بات کرنے سے نہیں روکتے ہیں۔میں ٹیوب لائٹ ہوں تو وہ فیوز لائٹ ہیں۔سندھ میں تعلیم پر بات نہیں کی۔153 ارب روپے ترقیاتی کاموں کیلیے رکھے گئے تھے۔حکومتی اخراجات اس طرح رکھے جاتے تو چار سو چونسٹھ ہونے چاہیے تھے۔انہوں نے نوکری بانٹیں ہے۔عوام کی کوئی خدمت کرتے ہیں۔وہ بہت زیادہ رشوت لیتا ہے۔ہیلتھ میں پانچ سال پرانی ہیں۔تعلیم میں دس سال پرانی آسکیمیں ہیں۔انہوں نے کہا کہ یہ وزیر اعلی نہیں عیارہے اعلی ہیں۔حلیم عادل نے جب دعا کرائی تو حکومتی کوئی بھی رکن اٹھ کر کھڑا نہیں ہوا۔ایم کیوایم اور پی ٹی آئی کے لوگوں کا جواب نہیں دیا گیا۔یہ عیارے اعلی ہے۔آصف علی زرداری کو قائد ظلت کا خطاب دیتا ہوں۔نصرت سحر عباسی نے کہا کہ وزیر اعلی نے آدھا گھنٹہ کورونا پر بات کی۔باقی باتیں سیاست پر کی ہیں۔ایک وزیراعلی کا کام صرف بجٹ پر بات کرنا تھا۔انہوں نے کہاکہ سپریم کورٹ بغیر سوچے سمجھے نوٹس لیتی ہے۔حسنین مرزانے کہا کہ مرادی علی شاہ کی زبانی آٹھویں بجٹ میں نے سنی ہے،مراد علی شاہ کا لہجہ پہلی بار دیکھا ہے۔سوائے ارکان پر تنقید کے کوئی پروگرام پیش نہیں کیا۔انہوں نے یہ کہا ہے کہ ہم شاید تنخواہوں 45 ارب کا پیسے نہیں دے سکتے۔اگر آپ کے پاس تنخواہیں دینے کے پیسے نہیں ہیں تو آپ نے تنخواہیں کیوں بڑھائیں۔کوئی بل پہلے اسمبلی میں آتا ہے۔آج تک اسمبلی کے ممبر کو فنانس بل نہیں دیا گیا ہے۔آپ کیا چھپانا چاہتے پیں؟اربوں روپے کے اخراجات چور دروازے سے لیکر آئے ہیں۔منتخب نمائندوں سے چھاپا رہے ہیں۔سندھ کے عوام ہیں ہر تحریک میں حصہ لیا ہے۔صوبے کے کسی گھمبیر مسائل کی طرف توجہ نہیں دی۔گڈ اسٹریم ایک لاکھ کیوسک فٹ ہورہی ہے۔آج بھی بدین پانی سے محروم ہیں۔ہمیں مجبور کررہے ہیں کہ ہم سڑکوں پر نکلیں۔انہوں نے کہا کہ کی جذباتی تقریریں عوام کو نہیں روک سکتی ہیں،کنور نوید جمیل نے کہا کہ پیپلز پارٹی جمہوریت چاہتی ہے جس میں انکی ڈیکٹیٹرشپ ہو۔آڈٹ رپورٹ بھی پیش نہیں کی۔اس دفعہ بہت زیادہ بے قاعدگی ہوئی۔ہم اجلاس میں آئے اور تمام تجاویز پیش کی۔کراچی میں 85 فیصد کورونا کے مریض ہیں کراچی میں ہیلتھ سیکٹر میں کوئی نئی اسکیم نہیں رکھی۔نیپا اسپتال 2009کی ایک کیو ایم کی اسکیم تھی کراچی دس منٹ کا فاصلہ دو گھنٹے میں طے ہوتا ہے۔انہوں نے کہا کہ کراچی کے لیے صرف 11 فیصد رکھے یہ احتجاج اپنی شکلیں تبدیل کرتا رہے گا۔یہ پورے کراچی میں پھیل جائے گا۔ایم کیو ایم کے رہنمامحمد حسین نے کہا کہ جب ہم بجٹ کا بائیکاٹ کرکے چلے گا۔پاکستان کرپشن کا بادشاہ اور منشیات فروش نے جو ایم کیوایم پر مغلظات بکی۔اگر وہ ہمارے سامنے بات کرتا تو ہم بتاتے کہ ہم ملک دشمن ہیں۔ تم نے الذوالفقار نے طیارہ اغواکیا۔اسی ذوالفقار علی بھٹو کا بیٹا اندرا گاندھی سے جا کر ملے تم اس تاریخ کو مسخ نہیں کر سکتے ہو۔منسٹر کے لبادے میں سب کو معلوم ہے تمہارے منشیات فروشوں سے تعلقات ہیں۔پاکستان کے عوام جانتے ہیں کہ جب جے آئی ٹی رپورٹ آئے گی تو اس رپورٹ میں آصف علی زرداری، آدی فریال کا نام بھی آئیگا۔ایم کیو ایم پاکستان پر الزام لگانے سے پہلے آپ جان لوہم نے اپنے بانی سے لا تعلقی کا اعلان کیا،انہوں نے کہا کہ تم بھی ذوالفقار علی بھٹو سے لا تعلقی کا اعلان کرو۔جس دن اسمبلی کا سیشن ہوگا ہم تمہارے سامنے اس پر بات کروں گا،اگر تم ذرہ اخلاقی جرت ہے تو اس سے لاتعلقی کا اعلان کرنا،حلیم عادل شیخ نے کہا کہ ہمارے ایم پی اے شہریار شر کے عزیز کو گولیاں ماری گئی ہیں۔اسپتال کا کو گھیرے میں لے لیا گیا۔جو بھی اموات ہورہی ہیں وزیر اعلی اس کو کورونا میں ڈال رہے ہیں۔

مزید :

صفحہ اول -