چین بھارت سے ملحقہ سرحد پر کسے تعینات کرنے جا رہا ہے؟

چین بھارت سے ملحقہ سرحد پر کسے تعینات کرنے جا رہا ہے؟
چین بھارت سے ملحقہ سرحد پر کسے تعینات کرنے جا رہا ہے؟

  

بیجنگ(ڈٰیلی پاکستان آن لائن)چین اور بھارت کے درمیان سرحدی کشیدی ختم نہ ہوسکی۔ بیجنگ حکومت نے لداخ میں مارشل آرٹس کے ٹرینر تعینات کرنے کا فیصلہ کیا ہے جو وہاں موجود فوجیوں کی تربیت کریں گے۔

بی بی سی کے مطابق چینی حکومت نے کہاہے کہ وہ اپنے بیس مارشل آرٹ ٹرینرز کو لداخ بھیج رہا ہے تاکہ وہاں موجود فوجیوں کو تربیت دی جاسکے۔ چینی فوج کی جانب سے یہ فیصلہ ایک ایسے وقت میں سامنے آیا ہے جب چند روز قبل 15جون کو چینی فوجیوں نے سرحد پر موجود بیس بھارتی فوجیوں کو دراندازی کی کوشش پر ہلاک کردیا تھا۔

اس واقعے کے بعد سے دونوں ملکوں کے تعلقات انتہائی کشیدہ ہیں۔ چینی فیصلے کی کوئی سرکاری وجہ نہیں بتائی گئی ہے۔

دونوں ممالک کے درمیان سنہ 1996 میں ہونے والے ایک معاہدے کے تحت اس علاقے میں کوئی بھی فریق، انڈیا یا چین کے فوجی وہاں بندوق اور دھماکہ خیز مواد کے ساتھ نہیں جاتے ہیں۔

دوسری جانب انڈین وزیر اعظم نریندر مودی نے اتوار کو انڈیا چین تناؤ کے بارے میں کہا کہ لداخ میں انڈیا کی سرزمین پر آنکھ اٹھا کر دیکھنے والوں کو سخت جواب دیا جائے گا۔

انھوں نے اتوار کو اپنی 'من کی بات' کے دوران کہا کہ انڈین فوجیوں نے دکھا دیا ہے کہ اپنے وقار پر آنچ نہیں آنے دیں گے۔

انھوں نے کہا: 'اگر ہندوستان دوستی نبھانا جانتا ہے تو وہ آنکھوں میں آنکھیں ڈال کر دیکھنا اور مناسب جواب دینا بھی جانتا ہے۔ ہمارے بہادر فوجیوں نے یہ دکھا دیا کہ وہ کبھی بھی ماں بھارت (انڈیا) کی شان پر آنچ نہیں آنے دیں گے۔'

مزید :

بین الاقوامی -