راجہ ریاض کے علاوہ حکمران جماعت کے وہ رہنما جو کھلے عام اپنی ہی حکومت پر تنقید کرنے لگے، نام سامنے آگئے

راجہ ریاض کے علاوہ حکمران جماعت کے وہ رہنما جو کھلے عام اپنی ہی حکومت پر ...
راجہ ریاض کے علاوہ حکمران جماعت کے وہ رہنما جو کھلے عام اپنی ہی حکومت پر تنقید کرنے لگے، نام سامنے آگئے

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن)پاکستان تحریک کی حکومت کے خلاف نہ صرف اپوزیشن رہنما بلکہ ان کی اپنی جماعت کے اراکین اسمبلی بھی تنقید کرتے دکھائی دیتے ہیں۔

حال ہی میں راجہ ریاض حکومت پر کھلے عام تنقید کرتے دکھائٰی دیے ہیں جب کہ اب سینیر صحافی اسد  علی طور نے دعویٰ کیاہے کہ راجہ ریاض کے علاوہ نجیب ہارون، خواجہ شیراز، ثنااللہ مستی خیل اور احمد حسین ڈیہڑی بھی ان اراکین اسمبلی میں شامل ہیں جو اپنی ہی حکومت پر کھلے عام تنقید کرتے ہیں۔

مائیکرو بلاگنگ ویب سائٹ ٹویٹر پر کی گئی پوسٹ میں صحافی اسد علی نےدعویٰ کیا کہ "کیا کشتی ڈوب رہی ہے؟ پہلے بی این پی مینگل  اوراب ق لیگ نے بھی اتحادیوں کے لیے رکھے گئے  وزیراعظم عمران خان کے عشائیہ میں شرکت سے معذرت کرلی ہے۔ادھر  راجہ ریاض کے علاوہ نجیب ہارون، خواجہ شیراز، ثنااللہ مستی خیل اور احمد حسین ڈیہڑی بھی ان اراکین اسمبلی میں شامل ہیں جو اپنی ہی حکومت پر کھلے عام تنقید کررہے ہیں۔

خیال رہےمسلم لیگ (ق)نے وزیراعظم عمران خان کے عشائیہ میں شریک نہ ہونے کا فیصلہ کیا ہے، ترجمان ق لیگ کاکہنا ہے کہ پارٹی رہنماوں کی مصروفیات کی بناپرعشائیہ میں شریک نہیں ہورہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق وزیراعظم عمران خان کی جانب سے اتحادی اور حکومتی ارکان کو وزیراعظم ہاﺅس میں عشائیہ دیاجائے گا جس میں معاونین، مشیر بھی شریک ہیں۔  وفاقی حکومت کی جانب سے مسلم لیگ(ق)کی قیادت سے رابطہ کیا گیا اورباضابط عشائیہ میں شرکت کی دعوت دی گئی،  ترجمان ق لیگ کاکہنا ہے کہ پارٹی رہنماؤں کی مصروفیات کی بناپرعشائیہ میں شریک نہیں ہورہے۔ترجمان کا مزید کہنا ہے کہ حکومت کے اتحادی ہیں مگرعشائیہ میں شریک نہیں ہورہے،بجٹ کی منظوری کے تمام عمل میں حکومت کوووٹ دے رہے ہیں۔

 بی این پی مینگل پہلے ہی عشائیہ میں شرکت سے انکار کرچکی ہے ۔ بی این پی کا کہنا ہے کہ وہ اب اتحادی نہیں رہے اس لیے شرکت نہیں کریں گے۔

مزید :

علاقائی -پنجاب -لاہور -