نوعمر لڑکے سے زنا بالجبر اور پھر قتل کیس کا عدالت نے تہلکہ خیز فیصلہ سنا دیا

نوعمر لڑکے سے زنا بالجبر اور پھر قتل کیس کا عدالت نے تہلکہ خیز فیصلہ سنا دیا
نوعمر لڑکے سے زنا بالجبر اور پھر قتل کیس کا عدالت نے تہلکہ خیز فیصلہ سنا دیا

  

نوشہرہ (ویب ڈیسک) ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج نوشہرہ ملک محمد حسنین نے نوشہرہ کے علاقے خویشگی پایان کے مقدمہ قتل اور زنا بالجبر کیس کا فیصلہ سنا دیا۔عدالت نے قتل اور زنا بالجبر کے 2 ملزمان کو 35، 35 سال قید اور جرمانے کی سزا سنائی ہے۔

روزنامہ جنگ کے ذرائع کے مطابق اکتوبر 2017ءمیں ملزمان ابرار، زبیر اور ذیشان نے خویشگی پایان میں 13 سالہ عادل کو اجتماعی زیادتی کے بعد قتل کیا تھا۔پولیس نے واقعے میں ملوث 2 ملزمان ابرار اور زبیر کو گرفتار کر لیا جبکہ تیسرا ملزم ذیشان فرار ہوگیا تھا جو تاحال روپوش ہے۔

ملزم زبیر اور ابرار نے سول جج جو ڈیشل مجسٹریٹ کی عدالت میں اعترافِ جرم کیا تھا۔عدالت نے ملزمان کو 35، 35 سال قید اور 3، 3 لاکھ روپے جرمانے کی سزا سنا دی جبکہ ایک ملزم کو اشتہاری قرار دے دیا۔

مزید :

علاقائی -خیبرپختون خواہ -نوشہرہ -