سودی معیشت کے خلاف جہاد کرنا ہو گا: سراج الحق

سودی معیشت کے خلاف جہاد کرنا ہو گا: سراج الحق
 سودی معیشت کے خلاف جہاد کرنا ہو گا: سراج الحق

  

راولپنڈی (ڈیلی پاکستان آن لائن) امیر جماعت اسلامی سراج الحق نے کہا ہے کہ ن لیگ، پیپلزپارٹی اور پی ٹی آئی کی حکومتوں نے مل کر ملک کو 50ہزارارب روپے سے زائد کا مقروض کیا، اگر قرضوں کی بنیاد پر ترقی ہوتی تو آج ہم چاند پر پہنچ جاتے۔امریکا اور آئی ایم ایف کے غلاموں نے پاکستان کا جغرافیہ اور نظریہ برباد کر دیا۔ ظالم جاگیرداروں اور کرپٹ سرمایہ داروں نے پاکستانیوں کی خودداری اور نوجوانوں کا مستقبل استعمار کے ہاتھوں گروی رکھ دیا۔ شدید گرمی میں تین روز تک ٹرین مارچ اس لیے کیا کیوں کہ پاکستان جل رہا ہے۔ لوگوں میں موٹرسائیکل میں پٹرول ڈلوا کر اپنے بچوں کو سکول چھوڑنے کی سکت نہیں رہی۔ لوگ مہنگائی اور غربت سے تنگ ہیں اور زندگی گزارنا محال ہو گیا ہے۔ پڑھے لکھے نوجوان بے روزگاری کی وجہ سے ڈگریاں جلا رہے ہیں۔ ملک پر مافیاز کا راج ہے ، ایک طرف ایک فیصد طبقہ 99فیصد وسائل پر قابض اور دوسری جانب مجبور اور بے بس عوام بنیادی ضروریات کے لیے ترس رہے ہیں۔ اس وقت جماعت اسلامی کے علاوہ سبھی سیاسی جماعتیں حکومت میں ہیں۔ اقتدار میں ہونے کے باوجود یہ لوگ چوکوں چوراہوں میں جلسے بھی کر رہے ہیں اور رو بھی رہے ہیں۔ ان سے پوچھتا ہوں کہ یہ کب تک عوام کو دھوکا دیتے رہیں گے۔ حکمران سن لیں کہ قوم بیدار ہو چکی۔ ہمارے مسائل کا حل اسلامی نظام میں ہے۔ سودی معیشت کے خلاف جہاد کرنا ہو گا۔ اللہ تعالیٰ کے احکامات سے بغاوت کریں گے تو انجام بنی اسرائیل جیسا ہو گا۔ ملک میں سبھی تجربات ناکام ہو گئے، اب ایک موقع اسلامی نظام کو ملنا چاہیے۔ قوم کرپشن سے نجات، بے روزگاری، سودی معیشت، مہنگائی کے خاتمے اور ملک کو اسلامی فلاحی ریاست بنانے کے لیے جماعت اسلامی کا ساتھ دیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے تین روزہ ٹرین مارچ کے اختتام پر راولپنڈی ریلوے سٹیشن پر کارکنوں سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ نائب امرا لیاقت بلوچ، میاں محمداسلم، امیر جماعت اسلامی پنجاب وسطی جاوید قصوری،امیر جماعت اسلامی پنجاب شمالی ڈاکٹر طارق سلیم، امیر ضلع راولپنڈی عارف شیرازی، ریلوے پریم یونین کے صدر شیخ انور اور دیگر قیادت بھی اس موقع پر موجود تھی۔ امیر جماعت نے رحیم یار خان سے راولپنڈی تک مختلف ریلوے سٹیشنز پر پہنچنے والے کارکنان کے جذبے کی تعریف کی اور ہر جگہ عظیم الشان استقبال پر ان کا شکریہ ادا کیا۔

قبل ازیں انہوں نے پیر کی شام لاہور ریلوے سٹیشن سے ٹرین مارچ کے تیسرے اور اختتامی مرحلے کے آغاز کے موقع پر میڈیا کے نمائندوں اور کارکنان جماعت اسلامی سے گفتگو کی اور کہا کہ ٹرین مارچ کا بنیادی مقصد ملک کے مجبور عوام کی ترجمانی ہے۔ مہنگائی کی وجہ وسائل کی کمی نہیں، بیڈگورننس، کرپشن اور سودی نظام ہے۔ جماعت اسلامی سیاست نہیں، قوم کی حقیقی آواز گونگے بہرے حکمرانوں تک پہنچا رہی ہے۔ عوام کا مطالبہ ہے کہ آئی ایم ایف سے کیے گئے معاہدے اسمبلی میں پیش کیے جائیں۔

انہوں نے کہا کہ وفاقی شرعی عدالت نے سود کے خلاف فیصلہ دے دیا، سود آئین پاکستان کے مطابق ناجائز ہے، اگر امریکا اور یورپ اپنے آئین کے پابند ہیں، تو ہم عالمی مالیاتی اداروں سے لاء آف لینڈ کے تحت معاہدے کیوں نہیں کر سکتے۔ جب تک سودی معیشت کی صورت میں حکمران اللہ تعالیٰ سے جنگ جاری رکھیں گے، بہتری نہیں آ سکتی۔ 

مزید :

اہم خبریں -قومی -علاقائی -پنجاب -راولپنڈی -