خالصتان نواز رہنما کا پارلیمانی الیکشن جیتنے کے بعد پاکستان کے حق میں بیان، بھارتی سیاسی حلقوں میں کھلبلی

خالصتان نواز رہنما کا پارلیمانی الیکشن جیتنے کے بعد پاکستان کے حق میں بیان، ...
خالصتان نواز رہنما کا پارلیمانی الیکشن جیتنے کے بعد پاکستان کے حق میں بیان، بھارتی سیاسی حلقوں میں کھلبلی

  

امرتسر (مانیٹرنگ ڈیسک) بھارتی پنجاب میں خالصتان نواز سیاسی جماعت کے صدر سمرن جیت سنگھ مان نے سنگرور پارلیمانی حلقے کا ضمنی الیکشن جیتنے پر اپنی کامیابی کو خالصتان ریا ست کے علمبردار جرنیل سنگھ بِھنڈراں والا کی تعلیمات کی مرہون منت قرار دیدیا۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق علیٰحدہ خالصتان ریاست کے قیام کی مہم کیخلاف بھارتی حکومت کے سخت ترین اقدامات کے باوجود مہم کسی نہ کسی صورت میں اب بھی زندہ ہے۔ اس کی مثال پنجاب کے سنگرور پارلیمانی حلقے کا ضمنی انتخاب ہے جہاں خالصتان نواز سیاسی جماعت شرومنی اکالی دل (امرت سر) کے صدر سمرن جیت سنگھ مان نے اڑھائی لاکھ سے زائد ووٹ حاصل کیے۔ یہ سیٹ بھگونت سنگھ مان کے تقریباً 3 ماہ قبل وزیر اعلیٰ بننے کی وجہ سے خالی ہوئی تھی۔غیرملکی میڈیا کے مطابق سمرن جیت سنگھ نے حال ہی میں قتل ہونیوالے گلوکار سدھو موسے والا اور خالصتانی رہنما جرنیل سنگھ بھنڈراں والے کو انتخابی مہم کا خصوصی مو ضو ع بنایا تھا۔ بھنڈراں والا جون 1984ء میں گولڈن ٹیمپل پر" آپریشن بلیو سٹار" کے دوران بھارتی فوج کے ہاتھوں ہلاک ہوگئے تھے۔ سمرن جیت سنگھ مان نے آپریشن بلیو سٹار کیخلا ف اپنے عہدے سے استعفیٰ دیدیا تھا۔الیکشن جیتنے کے بعد سمرن جیت سنگھ نے پہلی تقریر میں اپنی کامیابی کا سہرا اپنے کارکنوں اور جرنیل سنگھ بھنڈراں والا کی تعلیمات کو دیتے ہو ئے کہا بھنڈراں والے نے پرامن جدوجہد کے ذریعے جینے کا جو راستہ بتایا تھا، یہ اسی کی کامیابی ہے۔ کامیابی کا اثر عالمی سیاست پر بھی پڑیگا۔ طویل عرصے کے بعد ان کی پارٹی کی فتح ہوئی، لوگوں کا حوصلہ کافی بلند ہے اور وہ خاموش نہیں بیٹھیں گے۔سمرن جیت سنگھ مان نے کہا پاکستان کیساتھ واہگہ کے راستے بھارت سے تجارت بحال کرنے کیلئے آواز بلند کر یں گے۔ تجارت کیلئے سرحدیں کھل جانے سے کسانوں اور تاجر برادری دونوں کا فائدہ ہوگا۔ پنجاب کے کسان خودکشیاں کر رہے ہیں، وہ قرضوں کے بوجھ تلے دبے ہوئے ہیں جبکہ مزدوروں کو غربت اور فاقوں کا سامنا ہے۔ تاجروں کو مسلسل نقصان اٹھانا پڑ رہا ہے۔ ہم اس بات کو یقینی بنانے کی کوشش کریں گے کہ واہگہ کے نزدیک پاکستان کیساتھ سرحد کھل جائے۔ اس سے ہم پاکستان کو گیہوں بھیج سکیں گے جسے اسکی ضرورت ہے جبکہ یہ ہمارے پاس وافر مقدار میں موجود ہے۔

مزید :

بین الاقوامی -