الیکشن کمیشن کے 6ارب روپے کے اخراجات خزانے پربوجھ ہیں،شہری

الیکشن کمیشن کے 6ارب روپے کے اخراجات خزانے پربوجھ ہیں،شہری
الیکشن کمیشن کے 6ارب روپے کے اخراجات خزانے پربوجھ ہیں،شہری

  

لاہور (چودھری حسنین/ خیام) الیکشن کمیشن کے 6 ارب کے اخراجات شہریوں نے عوام پر ظلم اور خزانے پر بوجھ قرار دیا ہے۔ اور کہا ہے کہ اگر یہی رقم عوام کی فلاح و بہبودپر لگائی جاتی تو اس سے بہتر اور کیا ہو سکتا تھا۔ محمد سعید نے بتایا کہ اگر ان اخراجات کو عوام پر استعمال کیا جاتا تو بہت بہتر ہوتا کیونکہ عوام جس چکی میں پس رہی ہے اس کا اندازہ ہمارے حکمرانوں کو بالکل ہی نہیں ۔ ملک محمد رشید نے بتایا کہ الیکشن کمیشن سے اس بارے میں پوچھا جائے تو وہ فرمائیں گے کہ 2008ءمیں پاکستانی کرنسی کی ڈالر کے مقابلے میں کیا قدر تھی۔ اور آج کیا ہے یہ صرف اسی کا فرق ہے۔ اختر بھٹی نے بتایا کہ الیکشن ہونا ضروری ہے تو حکمرانوں کو چاہئے کہ اس کے تمام اخراجات اپنی جبیوں سے ادا کریں۔ کیونکہ پچھلی حکومت نے جس بے دردی سے ملک کی دولت لوٹی ہے۔ اس کا اندازہ بچے بچے کو ہے پرویزاقبال نے بتایاکہ اتنی رقم تو ہمارے صدر دے سکتے ہیں۔ ان کے لئے تو یہ رقم کچھ بھی نہیں کیونکہ وہ دنیا کے امیر ترین افراد کی فہرست میں شامل ہیں۔ ان کو چاہئے کہ 6ارب اپنی جیب سے ہی ادا کردیں۔ فیاض احمد نے بتایا کہ الیکشن الیکشن نہ کھیلا جائے کیونکہ اب پاکستان کی عوام کی برداشت سے باہر ہوتا جا رہا ہے اور اتنا بڑا بجٹ صرف خزانے پر بوجھ ہے

مزید : الیکشن ۲۰۱۳