رینٹل پاور کیس میں خط لکھنے پر راجہ پرویز اشرف کو سپریم کورٹ سے توہین عدالت کا شوکازنوٹس جاری

رینٹل پاور کیس میں خط لکھنے پر راجہ پرویز اشرف کو سپریم کورٹ سے توہین عدالت ...

راجہ پرویز اشر ف کومعلوم تھاکہ وہ کرپشن میں ملوث ہیں ، تحقیقات کے دوران ہی وزیراعظم بن گئے: عدالت

رینٹل پاور کیس میں خط لکھنے پر راجہ پرویز اشرف کو سپریم کورٹ سے توہین عدالت کا شوکازنوٹس جاری

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) سپریم کورٹ نے رینٹل پاور کیس میں خط لکھنے پر سابق وزیراعظم راجہ پرویز اشرف کوتوہین عدالت کا شوکاز نوٹس جاری کردیاہے اور آئندہ سماعت پر ذاتی طورپر حاضر ہونے کا حکم دیدیا۔ عدالت نے اپنے ریمارکس میں کہاکہ یوسف رضاگیلانی عدالت میں آسکتے ہیں تو راجہ پرویز اشرف کیوں نہیں ؟ اب تووہ وزیراعظم بھی نہیں ۔عدالت نے عبوری حکم نامے میں کہاکہ آئندہ کے لیے ایسی روایت کا راستہ روکنا چاہتے ہیں ، راجہ پرویز اشرف کی گرفتاری کا حکم بھی دیاتھاجبکہ اکیس جنوری کو نظرثانی کی درخواست واپس لے لی گئی ۔ سپریم کورٹ نے کہاکہ پرویز اشرف کو معلوم تھاکہ وہ کرپشن میں ملوث ہیں اور نیب کی تحقیقات کے دوران ہی وزیراعظم بن گئے، وہ اکیلے ملزم نہیں تھے ۔چیف جسٹس کی سربراہی میں سپریم کورٹ کا تین رکنی بنچ رینٹل پاور کیس کی سماعتکی ۔دوران سماعت عدالت نے قراردیاہے کہ راجہ پرویز اشرف کو بطور وزیراعظم خط لکھناعدالت پر اثرانداز ہونے کے مترادف ہے ، نوٹس جاری کریں گے جس پر وکیل وسیم سجاد نے موقف اختیار کیاکہ روزانہ آپ کو بہت سے خطوط آتے ہیں ۔عدالت نے برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہاکہ یہ عدالت ہے ،کوئی پوسٹ آفس نہیں ۔وسیم سجاد نے کہاکہ راجہ پرویز اشرف رینٹل پاور کیس میں مشکلات کا شکار تھے،اُن کی فیملی کی بدنامی ہوئی ، وزیراعظم کو لگا کہ نیب درست طریقے سے کام نہیں کررہا جس پر چیف جسٹس نے کہاکہ اِس ملک میں ہر شخص مشکلات کا سامنا کررہاہے ،یہی باتیں وہ چیئرمین نیب کو بھی لکھ سکتے تھے، رینٹل پاور کیس میں دیگر ملزمان بھی نامزد کیے جس پر وفاق کے وکیل وسیم سجاد نے استدعا کی کہ عدالت کے پاس اختیار ہے اور خط مستردکردیں ، نوٹس جاری نہ کریں ۔ چیف جسٹس نے کہاکہ اگر آپ کی بات مان بھی لیں تو لوگ کہہ سکتے ہیں کہ وزیراعظم سے متاثر ہوگئے ہیں ۔عدالت نے کہاکہ وضاحت کریں کہ کیوں نہ آپ کے خلاف قانون کے مطابق کارروائی کریں اور مزید سماعت دوہفتوں کیلئے ملتوی کردی گئی۔

مزید : اسلام آباد /Headlines