بالی وڈاداکاررضامرادکی دس روزہ دورہ کے بعد بھارت واپسی

بالی وڈاداکاررضامرادکی دس روزہ دورہ کے بعد بھارت واپسی

لاہور(فلم رپورٹر)بالی وڈاداکاررضامرادگزشتہ روز دس روزہ دورہ کے بعد بھارت واپس چلے گئے ۔واپسی سے قبل میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے رضا مرادنے کہاہے کہ یہ خوش آئندبات ہے کہ پاکستانی فلمو ںکامعیاربہترہورہاہے،پاکستانی فلم یاڈرامے میں کام کرناچاہتاہوں،اپنادل پاکستان میںچھوڑ کرجارہاہو ں،مشترکہ فلمسازی اس وقت ممکن ہے جب دونوں ملکوں کی حکومتوں تعاون کریں،امیتابھ بچن پاکستان آنے کے خواہشمندہیں۔رضامرادکاکہناتھایہ ایک حسین اتفاق ہے کہ جب بھارت میں فلم ”سلطنت “بنی تواس کے شروعات میں میری کمنٹری تھی اور پاکستانی فلم ”سلطنت “کے ٹریلرکا افتتاح بھی میں نے کیا ہے۔فلم تیکنیک اورایکٹنگ کے لحاظ سے بہت عمدہ ہے لیکن اس میںایک کمی ہے کہ رضامرادکاسٹ میں شامل نہیں ہے۔انکاکہناتھاکہ میرے والد مرادنے پانچ سوفلموں میں کام کیااورمیں بھی 5سوکے قریب فلمو ںمیں جلوہ گرہوچکاہوں۔میں نے پہلی پاکستانی فلم”سات لاکھ “ اس وقت دیکھی جب میںچھ برس کاتھا۔مجھے خوشی ہوئی کہ پاکستان فلم انڈسٹری ترقی طرف گامزن ہے اورسینماگھرپھرسے تعمیرہو رہے ہیں۔انکاکہناتاکہ مشترکہ فلمسازی کےلئے پاکستان اوربھارتی کی حکومتوںکوچاہیے کہ وہ دنو ںملکوں کی پروڈیوسرزایسوسی ایشنزکوبلائیں اورتجاویزلیں اوران پرعملدآمدکریں ۔اس سے تعلقات میں بہتری آئے گی اورماحول خوشگوارہوگا۔

انکاکہناتھاکہ غلام علی ،ملکہ ترنم نورجہاں ،مہدی حسن اورایس بی جان کوجس طرح پاکستان میں پسندکیاجاتاہے اسی طرح ان کی آوازبھارت میںبھی لوگوں کے کانوںمیں رس گھولتی ہے۔انکاکہناتھااولمپک میںاگرمہمان نوازی کے مقابلے ہوں توپاکستان کوگولڈ ملے ۔جب میں یہاں آیاتھاتوبالکل ٹھیک ٹھاک تھامگراب اپنادل پاکستان میںچھوڑ کرجارہاہوں۔انہوں نے بتایا کہ چودھری شجاعت حسین نے امیتابھ بچن کومدعوکرنے کےلئے مجھے خط دیا ہے جومیں انہیں خودپہنچاﺅں گا ۔امیتابھ کی والدہ کاتعلق فیصل آبادسے ہے اوروہ دوبرس کی عمرمیںیہا ںآئے تھے۔ایک بارجب میںنے پوچاکہ امیتابھ صاحب آپ پاکستان کیوں نہیںگئے توانہوں نے جواب دیاکہ انہیں کسی نے بلایا ہی نہیں۔انکاکہناتھاکہ فنکاروںکوپروڈیوسرکاخیال رکھناچاہیے کیونکہ اگرپروڈیوسرزندہ ہے توہم زندہ ہیں۔

مزید : کلچر