حکومت اساتذہ کی مشاورت سے تعلیمی اصلاحات مرتب کرے، سجاد اکبر

حکومت اساتذہ کی مشاورت سے تعلیمی اصلاحات مرتب کرے، سجاد اکبر


لاہور(ایجوکیشن رپورٹر)حکومت اساتذہ دشمن رویہ ترک کر کے اساتذہ کی مشاورت سے تعلیمی اصلاحات مرتب کرے ریشنلائزیشن کے آپریشن کو روک کر باہمی مشاورت سے اس پر عمل درآمد کیا جائے بیمار اور ریٹائرمنٹ کے قریب اساتذہ کو ریلیف دیا جائے پنجاب ٹیچرز یونین کے مرکزی صدر سید سجاد اکبر کاظمی، امتیاز احمد عباسی،رانا لیاقت علی،ظفر سندھو،ملک سعید،چوہدری محمد علی،جام صادق،اسلم گھمن،سعید نامدار،سجاد اختر اعوان، میاں ارشد،ملک مستنصر اعوان،رانا انوار نے کہا ہے کہ ایک سوچی سمجھی سازش کے تحت کچھ عناصر اساتذہ میں بے چینی و اضطراب پیدا کر کے وزیر اعلیٰ پنجاب کے تعلیمی اقدامات کو سبوتاژ کرنے کی کوشش کررہے ہیں

ایک طرف 46 لاکھ بچوں کو داخل کرنے کا منصوبہ بنایا جارہا ہے تو دوسری طرف ہزاروں اساتذہ کو ریشنلائزیشن کی آڑ میں گھروں سے کئی کئی کلومیٹر دور ٹرانسفر کر دیا گیا ہے جو کہ تعلیمی سیشن کے آغاز پر درست نہیں

کیونکہ دوسری طرف پنجاب بھر میں تقریباً 30 ہزار نئے اساتذہ بھرتی کئے جارہے ہیں ایک طرف تعلیمی اداروں میں سے اساتذہ ٹرانسفر کئے جا رہے ہیں اور دوسری طرف ان ہی سکولوں میں نئے اساتذہ بھرتی کئے جا رہے ہیں

پورے پنجاب میں اساتذہ میں بے چینی و اضطراب پایا جا رہا ہے کہ پیکیج اور ان سروس پرموشن پر تو کئی کئی سال تک عمل درآمد نہیں ہوتا لیکن ایسے اقدامات جو کہ اساتذہ دشمن ہوں ان پر دو دن میں عمل درآمد یقینی بنا یا جاتا ہے۔ موجودہ حکومت کے مشیران حکومت کو غلط مشورے دیکر تعلیمی عمل کو تباہ کررہے ہیں۔ اگر یہ ہی سلسلہ جاری رہا تو اساتذہ راست اقدام کرنے پر مجبور ہونگے۔ 3 اپریل کو پنجاب بھر میں اساتذہ لاہور سمیت 9 ڈویژنل مقامات پر دھرنے دیں گے اور شدید احتجاج کیا جائے گا۔ وزیر اعلی پنجاب براہ راست اساتذہ کی بات سنیں ورنہ حالات کے ذمہ دار خود ہونگے ۔ کیونکہ اب ظلم و صبر کی انتہاء ہو چکی ہے

مزید : میٹروپولیٹن 4