ملازمین کُش پالیسی اورکنٹریکٹ ملازمین کو ریگولر نہ کرنے کے خلاف احتجاج

ملازمین کُش پالیسی اورکنٹریکٹ ملازمین کو ریگولر نہ کرنے کے خلاف احتجاج

  لاہور(پ ر) صوبائی اور ڈویژنل قائدین ایپکا کی ہدایت کی روشنی میں وزیرِاعلیٰ پنجاب کی جانب سے بنائی گئی کمیٹی کی سفارشات کے مطابق پبلک ہیلتھ انجینئرنگ ڈیپارٹمنٹ کے کنٹریکٹ ملازمین کو ریگولر نہ کرنے اور سیکریٹری ریگولیشن کی ملازمین کُش پالیسی کے خلاف آج مورخہ 27-03-2014بروز جمعرات پبلک ہیلتھ انجینئرنگ ڈیپارٹمنٹ پنجاب کے تمام دفاتر میں ہڑتال کی گئی اور احتجاجی جلسے منعقد کئے گئے۔ جن میں ہزاروں ملازمین نے بھر پور شرکت کی ۔ لاہور میں چیف انجینئر آفس پبلک ہیلتھ انجینئرنگ ڈیپارٹمنٹ ۲۔ لیک روڈ ، چوبرجی ، لاہور میں ایک بھر پور احتجاجی جلسہ ہوا اور بعد ازاں جےن مندر تک احتجاجی ریلی نکالی گئی اور دھرنا دیا گیا۔احتجاجی جلسہ اور ریلی سے خطاب کرتے ہوئے ایپکا پبلک ہیلتھ انجینئرنگ ڈیپارٹمنٹ کے صدر ایم ضیا ءاللہ چوہدری، جنرل سیکریٹری نعمت علی گل اور دیگر عہدیداران نے سیکریٹری ریگولیشن پنجاب کی جانب سے وزیرِاعلیٰ پنجاب کی جانب سے بنائی گئی کمیٹی کہ جس کے وہ خود بھی ممبرتھے کی سفارشات کو یکسر نظر ا نداز کر کے کنٹریکٹ ملازمین کے خلاف ریمارکس لکھنے اور ان تجربہ کار ملازمین کی جگہ نئے ملازمین کو بھرتی کرنے کی رائے دینے پر انہیں شدید تنقید کا نشانہ بنایا۔ اور وزیرِاعلیٰ پنجاب جناب میاں محمد شہباز شریف صاحب اور چیف سیکریٹری پنجاب سے مطالبہ کیا کہ پبلک ہیلتھ انجینئرنگ ڈیپارٹمنٹ کے 2400کنٹریکٹ ملازمین کے متعلق کمیٹی کی سفارشات پر عملدرآمد کرنے کے احکامات جاری کئے جائیںاور ملازمین کو معاشی خودکشی اور فاقوں سے بچایا جائے ورنہ تمام ملازمین پبلک ہیلتھ انجینئرنگ ڈیپارٹمنٹ وزیرِاعلیٰ ہاﺅس کے سامنے احتجاج کرنے اور دھرنے پر مجبور ہوں گے اور اس کی تمام تر ذمہ داری سیکریٹری ریگولیشن پنجاب پر ہو گی۔

مزید : میٹروپولیٹن 1