شاہدرہ نجی سکول کی پر نسپل ڈکیتی میں مذاہمت کے دوران قتل ۔

شاہدرہ نجی سکول کی پر نسپل ڈکیتی میں مذاہمت کے دوران قتل ۔
شاہدرہ نجی سکول کی پر نسپل ڈکیتی میں مذاہمت کے دوران قتل ۔

  


لاہور،فیروز والا(کرائم سیل،نمائندہ پاکستان) تھانہ شاہدرہ کے علاقہ میں ونڈالہ روڈ کے قریب گاڑی میں سوار خاتون کو نامعلوم افراد نے گولیاں مارکر قتل کر دیا ،ساتھ سوار خاوند اور دونوں کمسن بچیاں محفوظ ،پولیس نے خاوند کی درخواست مقدمہ درج کر کے ملزمان کی گرفتاری کے لئے چھاپے مارنے شروع کر دیے ہیں جبکہ مقتولہ کی لا ش پوسٹ مارٹم کے بعد لواحقین کے حوالے کر دی جس کو سینکڑوں سوگوارں کی مو جو دگی میں سپرد خا ک کر دیا ۔تفصیلا ت کے مطا بق تھانہ شاہدرہ کے علاقہ مین ونڈالہ روڈ پرنجی سکول کی پرنسپل عائشہ نامی خاتون اپنے خاوند علی عظیم سے گاڑی چلانے کی ٹرینگ حاصل کر رہی تھی جبکہ گاڑی میں دونوں کمسن بچیاں بھی ان کے ہمراہ تھیں۔ رات گئے مین ونڈالہ روڈ کے قریب نامعلوم موٹر سائیکل سواروں نے ان کو رکنے کا اشارہ کیا مگر عائشہ جو کہ گاڑی چلا رہی تھی اس سے گاڑی کنٹرول نہ ہوئی جس پر نامعلوم موٹر سائیکل سواروں نے موٹر سائیکل گاڑی کے آگے لیجا کر عائشہ پر فائر کھول دیا گولی 28سالہ عائشہ کے دل کو چیرتی ہوئی نکل گئی جس سے وہ موقع پر ہلاک ہو گئی ملزمان عائشہ کو ہلاک ہوتے دیکھ کر موقع سے فرار ہو گئے ،واقعہ کی اطلاع ملتے ہی علاقے میں خوف ہراس پھیل گیا۔اطلاع کے مطابق خا تو ن کو واردات میں مزاحمت کے دوران قتل کیا گیا۔ملزمان نقدی اور موبائل بھی ساتھ لے گئے ۔پولیس نے عائشہ کے خاوند علی کی درخواست پرمقدمہ درج کر لیا تا ہم پولیس کے مطابق یہ کسی پرانی رنجش کا نتیجہ بھی ہو سکتا ہے جس کو بتانے سے گریز کیا جارہا ہے کیونکہ ملزمان نے کسی بھی قسم کی چھینا جھپٹی نہیں کی اور صرف گولیاں مار کر موقع سے فرار ہو گئے۔جبکہ مقتولہ کی لا ش پوسٹ مارٹم کے بعد لواحقین کے حوالے کر دی جس کو سینکڑوں سوگوارن کی مو جو دگی میں سپرد خا ک کر دیا ۔

مزید : صفحہ اول