راوی روڈ،تیز رفتار میٹرو بس کی ٹکر سے موٹر سائیکل سوارشدید زخمی

راوی روڈ،تیز رفتار میٹرو بس کی ٹکر سے موٹر سائیکل سوارشدید زخمی

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


لاہور(کرائم سیل)سروسز ہسپتال کا ورک چارج ملازم ڈیوٹی سے گھر جاتے میٹرو بس کی ٹکر سے شدید زخمی ہو گیا۔پولیس میٹرو بس ڈرائیور کے خلاف کارروائی سے گریز کر رہی ہے زخمی انصاف کی فراہمی کے لیے دفتر پاکستان پہنچ گیا۔نمائندہ" پاکستان" سے گفتگو کرتے ہوئے زخمی محمد عثمان اور اس کے دوست کامران نے یہ موقف اختیار کیا کہ وہ سروسز ہسپتال میں ورک چارج پر ملازمت کرتا ہے چند روز قبل وہ اپنی ڈیوٹی ختم کر کے اپنے گھر مکان نمبر 315 بارہ دری روڈ فرقہ آباد مین بازار شاہدرہ جا رہا تھا کہ راوی پل پر اس کو تیز رفتار میٹرو بس نے ٹکڑ ماری جس کی وجہ سے اس کو شدید چوٹیں آئیں اور اس کی بازو ٹوٹ گئی ساتھ میں اس کی ٹانگ فریکچر ہو گئی اور پاؤں کی ہڈی ٹوٹ گئی ۔ساتھ میں اس کی موٹر سائیکل جو کی اپلائیڈ فار تھی مکمل طور پر تباہ ہو گئی ۔میٹرو بس ڈرائیور نے حادثہ کے بعد بس کو روکنے کی بجائے بھگا دیا۔اور موقع سے فرار ہو گیا۔انہوں نے مزید بتایا کہ اس حوالے سے ہم نے تھانہ میں درخواست دینے کی کوشش کی لیکن تاحال پولیس کی جانب سے ان کی درخواست کو موصول تک نہیں کیا گیا اور نہ ہی ڈرائیور کے خلاف کوئی کارروائی کی گئی ہے ۔
انہوں نے کہا کہ میٹرو ٹریک ختم ہوتے ہی میٹرو بس ڈرائیور نہایت تیز رفتاری کے ساتھ ڈرائیونگ کرتے ہیں اور حادثات معمول کی بات بن چکے ہیں۔پولیس حکام سے اپیل ہے کہ معاملے کا نوٹس لیکر انہیں انصاف فراہم کیا جائے جبکہ میٹرو بس انتظامیہ بھی معاملے کا نوٹس لے۔اس حوالے سے متعلقہ تھانہ میں رابطہ کیا گیا تو انہوں نے بتایا کہ ایسی کوئی درخواست انہیں موصول نہیں ہوئی ہے اگر ہوتی تو کارروائی کی جاتی۔

مزید :

علاقائی -