کنساس سٹیٹ یونیورسٹی اور ایچ ای سی پاکستان کے اشتراک سے بین الاقوامی ورکشاپ

کنساس سٹیٹ یونیورسٹی اور ایچ ای سی پاکستان کے اشتراک سے بین الاقوامی ورکشاپ

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


لاہور(ایجوکیشن رپورٹر)یونیورسٹی آف انجنیئرنگ اینڈ ٹیکنالوجی لاہورکے شعبہ آرکٹیکچر کے زیراہتمام کنساس سٹیٹ یونیورسٹی اور ہائر ایجوکیشن کمیشن پاکستان کے اشتراک سے 3روزہ بین الاقوامی ورکشاپ بعنوان’’ روایتی اور جدید طرز تعمیر میں خوبصورتی کا عنصر‘‘کیمپس میں شروع ہوگئی ہے۔ جس کا بنیادی مقصد خوبصورتی کے ذریعے تعمیرات میں نکھار لانے کی طرف توجہ مبذول کروانا ہے جس میں ڈیزائنگ کی ہر سطح پر عمارتوں اور زمینی تزین کیلیے جدید مہارتوں کے استعمال سے روشناس کروایا جا سکے۔ اس موقع پر افتتاحی تقریب کے مہمان خصوصی پروفیسر گیری جے کوٹس، کنساس سٹیٹ یونیورسٹی نے کہا کہ خوبصورتی ہمیشہ آنکھوں کو خیرہ کرتی ہے اس لیے پیشہ وارانہ صلاحیتوں کو آزماتے ہوئے ایسی عمارتیں اور زمین تیار کرنا نہایت بڑا چیلنج ہے ۔

جو جمالیاتی حسن کو برقرار رکھ سکیں۔ انہوں نے کہا کہ گہری دلکش خوبصورتی کیلئے گہر ے مشاہدے کی ضرورت ہے اس لحاظ سے تمام حِسیں مکمل اور درست طریقے سے فعال کی جائیں۔ اسی دوران ڈین آف آرکٹیکچر اور پلاننگ پروفیسر ڈاکٹر غلام عباس انجم نے کہا کہ کسی بھی ملک کے انفرا سٹرکچر کی تعمیر میں فن تعمیر ریڑھ کی ہڈی کی مانند ہوتی ہے۔ لہذا اس سلسلے میں روایتی اور جدید طرز تعمیر کی تمام مہارتوں کو بروئے کار لاتے ہوئے سائنسی بنیادوں پر خوبصورت شاہکار تخلیق کرنے کی اشد ضرورت ہے جس سے خوبصورتی کے عنصر کا حصول بھی یقینی بنایا جاسکتا ہے اور شعبہ بھی مزید مستحکم ہوگا۔ افتتاحی نشست میں مشہور ماہر تعمیرات کامل خان ممتاز اور تیمور خان ممتاز نے بھی موضوع پر سیر حاصل گفتگو کی۔ واضح رہے ورکشاپ مختلف تکنیکی نشستوں، مختلف جگہوں کے دوروں اور پینل ڈسکشن پر مشتمل ہے جو 29مارچ تک جاری رہے گی۔ افتتاحی تقریب میں شعبہ کے اساتذہ اور طلبہ کی کثیر تعداد نے بھی حصہ لیا۔