2013ء میں بڑا حال تھا اب نیا پاکستان بن رہا ہے، دہشتگردی کی کمر توڑ دی، اسے ختم کر کے دم لینگے: نواز شریف

2013ء میں بڑا حال تھا اب نیا پاکستان بن رہا ہے، دہشتگردی کی کمر توڑ دی، اسے ختم ...

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

حیدرآباد(بیورو رپورٹ )وزیر اعظم میاں محمد نواز شریف نے کہا ہے کہ اب نیا پاکستان بن رہا ہے، 2013 میں اقتدار سنبھالا تو پاکستان کے حالات بہت خراب تھے، ملک بھر میں کہیں سکون نہیں تھا۔ الحمد للہ آج ہم نے دہشتگردی کی کمر توڑ دی ہے۔ کراچی کے حالات بھی بہتر ہو گئے۔ اب لوگ باہر نکلنے سے نہیں ڈرتے۔ آج اس شہر میں امن ہے، لوگ اطمینان سے اپنی زندگی جی رہے ہیں اور کاروبار کر رہے ہیں، بلوچستان میں بھی دہشتگردی کا راج تھا لیکن آج وہاں بھی امن ہے۔ ہم انشا اللہ پاکستان سے دہشتگردی کا خاتمہ کر کے دم لیں گے۔ اگلے سال ملک بھر سے لوڈشیڈنگ کا بھی خاتمہ ہو جائے گا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے پیرکو حیدرآباد میں ورکرکنونشن سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر وفاقی وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق ، ڈاکٹرآصف کرمانی ، سنیٹررحیلہ گل مگسی، سنیٹرنہال ہاشمی، محمداسماعیل راہو، پیرشاہ محمدشاہ اور دیگرصوبائی و مقامی عہدیدار موجودتھے۔وزیر اعظم میاں محمد نواز شریف نے کہاکہ میرے پاس آپ کے جوش وجذبے کی تعریف کرنے کیلئے الفاظ نہیں ہیں۔ یہی جوش وجذبہ بلوچستان میں بھی دیکھ چکا ہوں۔ وزیر اعظم نے حیدر آباد کی حالت زار پر دکھ کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اس شہر میں آج بھی پینے کا صاف پانی نہیں اور سڑکیں ٹوٹی ہوئی ہیں۔ بچوں کیلئے اسکولز اور ہاسپٹلز نہیں ہیں۔ انہوں نے سوال اٹھایا کہ پرویز مشرف اور پیپلز پارٹی کے ادوار میں حیدر آباد میں موٹر وے اور یونیورسٹی کیوں نہیں بنائی گئی؟ جب یہ ووٹ مانگنے آئیں تو ان سے پوچھو کہ انہوں نے آپ کے کون سے معاملات کو ٹھیک کیا ہے؟ ان ہوں نے کہاکہ جب ہمیں ذمہ داری ملی تو اسے فرض سمجھ کر اپنا کام پورا کیا۔ ہم توانائی بحران کے لئے ایمرجنسی اقدام نہ اٹھاتے تو معاشی طور پر پاکستان کا برا حال ہوتا۔ پاکستان میں ہونے والی 16 16 گھنٹے کی لوڈشیڈنگ کو بتدریج کم کیا جو انشا اللہ اگلے سال ختم ہو جائے گی۔ اس کے علاوہ کراچی سے حیدر آباد موٹر وے پہنچ رہی ہے جو سکھر تک جائے گی۔ وزیر اعظم نواز شریف نے اپنے خطاب میں حیدر آباد کی عوام کیلئے ہیلتھ کارڈ، ایئرپورٹ، میٹرو بس سروس، یونیورسٹی اور میئر کیلئے 50 کروڑ روپے جاری کرنے کا اعلان کیا۔ انہوں نے کہاکہ وہ دن دور نہیں جب پاکستان سے غربت اور جہالت کا خاتمہ ہوگا۔ ملک میں تعلیمی انقلاب آئے گا۔ وزیر اعظم نے کہا کہ حیدر آباد سے موٹر وے سکھر اور پھر ملتان جائے گی۔ موٹر وے سے کراچی سے پشاور ایک دن میں پہنچیں گے۔انہوں نے کہا کہ پاکستان بدل رہا ہے، ترقی کر رہا ہے۔ اس سے پہلے کوئی غیر ملکی سرمایہ کار کراچی یا پاکستان آنے کو تیار نہیں تھا۔2013 سنہ تک برا حال تھا۔ ہر طرف بے چینی تھی۔ کراچی کا تذکرہ کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ کراچی جاتا ہوں تو ہر جگہ کچرے کے ڈھیرے اور دھول ہی دھول ہے۔انہوں نے کہا کہ بس دل کی گہرائیوں سے سلام پیش کر رہا ہوں، جگہ نہ ہونے کی وجہ سے لوگوں کو جانا پڑا، میں ان سے معذرت کرتا ہوں، پھر حیدرآباد آؤں گا اور دل کی باتیں کروں۔