زرداری جہاں مرضی پناہ لیں‘ لوٹ مار کا حساب دینا ہوگا:عابد شیر

زرداری جہاں مرضی پناہ لیں‘ لوٹ مار کا حساب دینا ہوگا:عابد شیر

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

لاہور( این این آئی )وزیرمملکت برائے پانی و بجلی عابدشیر علی نے کہا ہے کہ شرجیل میمن نیب کی چھترول پرسب کچھ اگل دیں گے ،آصف علی زرداری پنجاب میں پناہ لیں یا کہیں اور جاکر بیٹھیں انہیں لوٹ مار کا حساب دینا ہوگا اور ان سمیت جس نے بھی اربوں روپے کی لوٹ مار کی انہیں عدالتوں اور عوام کا سامنا کرنا پڑے گا،جب تک ماڈل ایان علی جیل میں تھی تو پیپلزپارٹی کے رہنماؤں کی زبانوں پر تالے لگے تھے اور بیرون ملک جاتے ہی سی ڈیز اور بلیک میں سینما کی ٹکٹیں بیچنے والے بھی میدان میں آگئے ہیں اور چوہدری نثار کے خلاف باتیں کررہے ہیں ،موجودہ حکومت 2018ء کے آخر تک بجلی کی مجموعی پیداوار کو 26 ہزار میگا واٹ تک لے جائے گی،لوڈ شیڈنگ کا دورانیہ 18 سے 20 گھنٹے سے کم ہو کر 4 سے 6 گھنٹے رہ گیا ہے اور آنے والے دنوں میں اس میں مزید کمی ہو گی ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے 1223 میگا واٹ کمبائنڈ سائیکل پاور پلانٹ بلوکی کے دورے کے موقع پر صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ عابد شیر علی نے کہا کہ پیپلز پارٹی والے جوکچھ بھی کہیں ہم نے ملک سے چوروں، لٹیروں اور ڈاکوؤں کا خاتمہ کرنے کا عزم کررکھاہے،اگر شرجیل میمن بے قصور ہیں تو انہیں اپنی وزارت سے دستبردار کیوں ہونا پڑا اور 3 سالہ خود ساختہ جلاوطنی میں کیوں رہنا پڑا؟۔ اب سی ڈیز بیچنے والوں اور سینما کی ٹکٹیں بلیک میں فروخت کرنے والوں کا بھی ٹرائل ہوگا۔انہوں نے پانی کی تقسیم کے حوالے سے سوال کے جواب میں کہا کہ پیپلز پارٹی اب سندھ کارڈ کھیلنا چھوڑ دے۔ ڈیموں میں پانی کے اخراج کا کام ارسا کا ہے جس میں ہر صوبے کی نمائندگی ہے اور ارسا صوبوں کی مشاورت اور طلب کے مطابق ڈیموں سے پانی کا اخراج کرتا ہے، اس سلسلہ میں ہم تمام ریکارڈ پیش کرنے کو تیار ہیں۔ انہوں نے کہا کہ بال ٹمپرنگ کرنے والوں کیخلاف ہم دھرنا دیں گے اور وہاں صحت، تعلیم، موٹر ویز اور ڈیمز کے منصوبے شروع کرائیں گے ۔تعمیری سیاست کے ذریعے خیبر پختوانخواہ کے عوام کا مقدمہ اب (ن) لیگ لڑے گی۔ہم اپنی کارکردگی کی بنیاد پر اگلے انتخابات میں عوام کے پاس جائیں گے اورکلین سویپ کرینگے ،(ن) لیگ سندھ اور خیبر پختوانخواہ میں بھی حکومت بنائے گی ۔انہوں نے کہا کہ مارچ 2018ء تک ملک میں بجلی کی زیرو لوڈشیڈنگ ہو گی ماسوائے ان علاقوں کے جہاں صارفین بجلی چوری کرتے ہیں اور بل بھی ادا نہیں کرتے اور ان علاقوں میں بجلی کے لائن لاسز کے تناسب سے لوڈشیڈنگ کا دورانیہ ہو گا۔