تحقیق کاروں کو ایک پتھر پر 14 کروڑ سال پرانی ایسی چیز مل گئی کہ دیکھ کر ہر کسی کی آنکھیں کھلی کی کھلی رہ گئیں، نئی تاریخ رقم ہوگئی

تحقیق کاروں کو ایک پتھر پر 14 کروڑ سال پرانی ایسی چیز مل گئی کہ دیکھ کر ہر کسی ...
تحقیق کاروں کو ایک پتھر پر 14 کروڑ سال پرانی ایسی چیز مل گئی کہ دیکھ کر ہر کسی کی آنکھیں کھلی کی کھلی رہ گئیں، نئی تاریخ رقم ہوگئی

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

سڈنی (نیوز ڈیسک) فلم جراسک پارک سے شہرت پانے والے قدیم جانور ڈائنو سار کے حقیقی پنجے کا دیوقامت نشان آسٹریلوی سائنسدانوں نے پہاڑوں میں دریافت کرلیا ہے۔ میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق ڈائنو سار کے پنجے کا نشار تقریباً چھ فٹ طویل ہے جبکہ اس کی چوڑائی اتنی زیادہ ہے کہ اس کے اندر پانچ، سات آدمی باآسانی لیٹ سکتے ہیں۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ یہ نشان ساروپولڈ نامی لمبی گردن والے ڈائنوسار کے پنجے کا ہے جو تقریباً 14 کروڑ سال قبل اس علاقے میں پایا جاتا تھا۔

200 سال سے چھپ کر بیٹھے شخص نے دنیا کو حیران کر دیا

یہ حیرت انگیز دریافت اس علاقے میں ہوئی ہے جسے آسٹریلیا کے جراسک پارک کے نام سے دنیا بھر میں جانا جاتا ہے۔ یہاں 21 مختلف اقسام کے ڈائنوسار کے پنجوں کے نشان دریافت ہوچکے ہیں۔ اس سے پہلے ڈائنو سار کے سب سے بڑے پنجے کا نشان بولیویا میں دریافت ہوا تھا جس کی لمبائی تقریباً چار فٹ تھی۔ یونیورسٹی آف کوئنز لینڈ سے تعلق رکھنے والے سائنسدان ڈاکٹر سلیو سیلس بیری جنہوں نے تحقیقی سربراہی کی، کا کہنا تھا کہ یہ دریافت ڈائنوسار کے متعلق کی جانے والی اہم ترین دریافتوں میں سے ایک ہے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -