کچرا اٹھانے کے لئے بہت کوششیں کیں لیکن نہیں کر سکے: مراد علی شاہ

کچرا اٹھانے کے لئے بہت کوششیں کیں لیکن نہیں کر سکے: مراد علی شاہ
کچرا اٹھانے کے لئے بہت کوششیں کیں لیکن نہیں کر سکے: مراد علی شاہ

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن) وزیر اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے کہا ہے کہ ہم نے کراچی سے کچرا صاف کرنے کی بہت کوشش کی لیکن کچرا صاف نہیں کر پائے۔ گیس کی تمام اسکیمیں پنجاب میں لگ رہی ہیں،آئین کے مطابق جس صوبے میں گیس موجود ہے وہاں فراہمی ترجیح ہوگی۔وفاقی حکومت کی جانب سے جاری کئے گئے 37 ارب ڈالر کے یہ منصوبے آئین کی شق 158 کی صریح خلاف ورزی ہیں کیوں کہ اس شق کے مطابق پیداوار کا بڑا حصہ اس صوبے کو ملے گا جہاں کنویں واقع ہیں۔

میں افسانہ ہوں.. کردستان سے تعلق رکھنے والی ایک لڑکی.... مجھے ایرانی انٹیلی جنس نے جنسی تشدد کا نشانہ بنایا: کرد لڑکی کا علی خامنہ ای کے نام خط
تفصیلات کے مطابق وزیر اعلیٰ سندھ نے کراچی میں کچرا صاف کرنے کے معاملے پر سندھ حکومت کی غفلت تسلیم کرتے ہوئے کہا ہے کہ کچرا جس تندہی کے ساتھ صاف کرنا تھا وہ نہیں کر پائے ۔کچرا اٹھانے کے کام کا دوبارہ جائزہ لے رہے ہیں۔کچرا صاف کرنے کے لیے جس طریقے سے کام کرنا تھا نہیں کرسکے۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ کچرا اٹھانے کے لیے چین سے آنے والے گاڑیوں پر ٹیکس زیادہ لگایا گیا اور کچرا ٹھانے والی گاڑیوں کی ایف بی آر سے کلیئرنس میں 2ماہ لگے۔

آصف زرداری چکری میں جلسے کے لئے آئیں سیکورٹی کے ساتھ چائے بھی پلاﺅں گا: چوہدری نثار
دوسری جانب مراد علی شاہ نے وزیر اعظم نواز شریف کو خط لکھ کر ان کے سوئی گیس کے منصوبوں کی توسیع کے فیصلے پر تنقید کی ہے جس میں بقول ان کے زیادہ تر منصوبے پنجاب کو دیے گئے ہیں۔خط میں ان کا کہنا تھا کہ پنجاب گیس کی ملکی پیداوار کا صرف تین فیصد پیدا کرتا ہے لیکن اس کا خرچ 42 فیصد ہے۔ 37 ارب ڈالر کے یہ منصوبے آئین کی شق 158 کی صریح خلاف ورزی ہیں کیوں کہ اس شق کے مطابق پیداوار کا بڑا حصہ اس صوبے کو ملے گا جہاں کنویں واقع ہیں۔

ڈی جی رینجرز میجر جنرل محمد سعید کا کراچی سپرہائی وے ٹول پلازہ،ملحقہ علاقوں کا دورہ،شہرکے داخلی وخارجی راستوں کی سیکیورٹی بڑھانے کی ہدایت
وزیرِ اعلیٰ نے خط میں لکھا ہے کہ سوئی سدرن سندھ میں یہ کہہ کر گیس کے نئے کنکشن فراہم نہیں کر رہی کہ ان پر وفاقی حکومت کی جانب سے پابندی عائد ہے۔ سیاسی بنیادوں پر کنکشن کی فراہمی سے بددلی پیدا ہوتی ہے اور یہ قومی ہم آہنگی کے لیے نقصان دہ ہے۔

مزید :

کراچی -