بنی گالہ کی تعمیرات ریگولر کریں یا جرمانہ؟ کیوں نہ رانا ثنا اللہ کو بلالیں: سپریم کورٹ

بنی گالہ کی تعمیرات ریگولر کریں یا جرمانہ؟ کیوں نہ رانا ثنا اللہ کو بلالیں: ...

اسلام آباد(آئی این پی ) چیف جسٹس میاں ثاقب نثار نے کہا ہے کہ بنی گالہ میں جو تعمیرات ہو چکی انہیں ریگولر کریں یا جرمانہ کریں ، وقت نہیں اس کیس کومزید لمبانہیں کر سکتے،ہرچیزکاحل موجودہے لیکن کام کرنے کاعزم ہوناچاہئے،کیوں نہ راناثنااللہ کو بلا لیں، پنجاب میں اصل وہ ہی ہیں،مرکزاورصوبے میں حکومت انہی کی ہے۔ منگل کو چیف جسٹس ثاقب نثارکی سربراہی میں 3 رکنی بنچ نے بنی گالہ غیر قانونی تعمیرات کیس کی سماعت کی۔ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے دوران سماعت عدالت کو بتایا کہ وزیر کیڈڈاکٹر طارق فضل چودھری سے رابطہ نہیں ہو سکا وہ بیرون ملک ہیں وقت دے دیں اس چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ ایک ایشو بوٹینیکل گارڈن میں تجاوزات کا ہے،دوسراایشوغیرقانونی تعمیرات کاہے،تیسراایشو راول ڈیم میں گندے پانی کاہے،ہم توآج اس کیس کونمٹانا چاہتے تھے ،چیف جسٹس نے کہا کہ جو تعمیرات ہو چکی انہیں ریگولر کریں یا جرمانہ کریں ، وقت نہیں اس کیس کومزید لمبانہیں کر سکتے،آج فریقین کوسن کر فیصلہ کر لیتے ہیں۔ دوران سماعت چیئرمین سی ڈی اے نے کہا کہ غیرقانونی تعمیرات کوریگولرکرنے کیلئے حکومت کوخط لکھیں گے،ریگولرکرنے سے پہلے سیٹلائٹ سروے کراناپڑے گا۔ چیف جسٹس ثاقب نثار نے کہا کہ خط لکھنے سے بہترہے فائل لے کرخودوزارت چلے جائیں،ہرچیزکاحل موجود ہے لیکن کام کرنے کاعزم ہوناچاہئے۔ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے کہا کہ عدالت آئندہ پیرتک کاوقت دیدے،جسٹس عمرعطابندیال نے ریمارکس دیئے کہ ابھی تک ہمیں مسائل کے حل کاپلان نہیں دیاگیا،چیئرمین صاحب آپ نے ابھی تک کیاکیا۔چیف جسٹس نے کہا کہ کیوں نہ راناثنااللہ کوبلالیں،پنجاب میں اصل وزیرراناثنااللہ ہیں،مرکزاورصوبے میں حکومت انہی کی ہے۔ آئندہ سماعت تک تمام مسائل کاحل لیکرآئیں،جن جن کوبلاناہے ان کے نام بھی دیدیں۔ عدالت نے کیس کی مزید سماعت آئندہ منگل تک ملتوی کردی۔

مزید : صفحہ آخر