لیڈی ہیلتھ ورکرز کا دھرنا دوسرے روز بھی جاری ، ہارٹ اٹیک سے ایک خاتون انتقال کر گئی

لیڈی ہیلتھ ورکرز کا دھرنا دوسرے روز بھی جاری ، ہارٹ اٹیک سے ایک خاتون انتقال ...

لاہور(کرائم رپورٹر) پنجاب اسمبلی کے سامنے لیڈی ہیلتھ ورکرز کا مال رو ڈ پر دھرنا دوسرے روز بھی جاری ‘دھرنے کے دوران ایک لیڈی ہیلتھ ورکر حرکت قلب بند ہونے سے انتقال کر گئی‘ خو ا تین ہیلتھ ورکرز نے مطالبات کی منظوری تک مال روڈ پر ڈیرے جما لیے جبکہ چیئرنگ کراس ٹریفک کیلئے مکمل بند ہونے سے شہریوں کو مشکلات کا سامنا ‘خواتین کاچیف جسٹس پاکستان نوٹس لینے کامطالبہ ۔تفصیلات کے مطابق چیئرنگ کراس مال روڈ پر جوش سے بھرپور نعرے لگاتی اور حکومت کوللکارتی خواتین کے دھرنے میں اس وقت افسوسناک صورتحال پیدا ہو گئی جب طبیعت خراب ہونے پر رات سے ہسپتال میں داخل لیڈی ہیلتھ ورکر کے انتقال کی خبر پہنچی۔ خبر سنتے ہی احتجاجی خواتین میں کہرام مچ گیاابھی لیڈی ہیلتھ ورکر زکا پہلا غم کم نہیں ہوا تھا کہ لاہور ہائیکورٹ کے وکیل نے دھرنا پر بیٹھی لیڈی ورکر پر موٹر سائیکل چڑھا دی، جس کے نتیجے میں خاتون شدید زخمی ہوگئی دھرنے کی وجہ سے مال روڈ اور اطراف کی سڑکوں پر ٹریفک کا نظام درہم برہم ہو گیا، راستے بند ہونے سے بہت سے شہری سیخ پا نظر آئے اور احتجاجی خواتین سے بحث و تکرار کا سلسلہ بھی جاری رہاہیلتھ ورکرز کا کہنا تھا کہ سروس سٹرکچر، واجبات کی ادائیگی سمیت دیگر مطالبات پر حکومت عرصہ دراز سے ٹال مٹول سے کام لے رہی ہے جبکہ لیڈی ہیلتھ ورکرز نے مطالبات پورے نہ ہونے پر وزرا کا اسمبلی میں داخلہ بند کرنے کی بھی دھمکی دے دی ہے ۔واضح رہے 45سالہ فرزانہ جہلم کی رہائشی تھی جو گزشتہ روز دھرنے کے دوران اچانک بے ہوش ہوگئی جسے طبی امداد کیلئے فوری مقامی ہسپتال منتقل کردیاگیاجہاں ڈاکٹروں نے اس کی موت کی تصدیق کر دی ڈاکٹروں کے مطابق متوفیہ کی موت حرکت قلب بند ہونے کے باعث ہوئی ہے۔

لیڈی ہیلتھ ورکرز

مزید : صفحہ اول