جندول ،بم دھماکہ میں دونوں آنکھوں سے محروم نابینا کی مدد کی اپیل

جندول ،بم دھماکہ میں دونوں آنکھوں سے محروم نابینا کی مدد کی اپیل

  

جندول(نمائندہ پاکستان) شینہ دھماکہ میں دونوں آنکھوں کی بینائی سے محروم تحصیل منڈا کے رہائشی شخص نے حکومت سے سرکاری علاج اور باعزت روزگار دینے کا مطالبہ کیا ہے، جندول پریس کلب میں میڈیاں سے گفتگو کرتے ہوئے مسافر خان ولد خان محمد ساکن گاوں طور قلعہ تحصیل منڈا کا کہنا تھا کہ سال2011میں ایک جنازہ کے دوران خود کش حملہ ہوا تھا جس میں وہ بری طرح زخمی ہوا تھا اور اس کی دونوں آنکھیں ضائع ہو گئی تھی اس کا کہنا تھا کہ وہ غریب ضرور تھا مگر تنخواہ پر گاڑی چلا کر زندگی کا گذارہ چلاتا تھا تاہم بینائی سے محروم ہونے کے بعد وہ کسی بھی کام کا نہ رہاں ۔ انہوں نے کہا کہ اس وقت کے عوامی نیشنل پارٹی حکومت میں اسے صرف 1لاکھ روپے دیئے گئیں تھیں تاہم اس کے ابتدائی علاج پر چار لاکھ سے زیادہ خرچ آیا تھا جس کی وجہ سے وہ کافی مقروض بھی ہوا ہے۔ اس کا کہنا تھا کہ وہ پانچ لڑکیوں اور ایک نو عمر بچے کا باپ ہے اور اس کے علاوہ گھر کو سنبھالنے والا کوئی نہیں اس کا کہنا تھا کہ وہ کسی بھی حال میں کسی کے سامنے ہاتھ پھیلا کر رزق نہیں کمانا چاہتے اور چونکہ وہ بے روزگار ہے اس لئے اس کے گھر میں کئی کئی روز تک فاقے ہوتے ہیں انہوں نے کہا کہ دھماکہ کے دوران اس کے بدن میں داخل ہونے والے بم کے ٹکڑے تا حال اس کے وجود میں پڑے ہیں اس لئے کہ اس کے پاس علاج کے پیسے نہیں ۔انہوں نے کہا کہ علاقہ میں جہاں عید اور دوسرے مواقع پر خوشیاں منائی جاتی ہے ان کے گھر میں بچے رورو کر خوشی کا دن غم میں گذار لیتے ہیں اور بچو ں کو دیکھ کر ہم میاں بیوی بھی پھوٹ پھوٹ کر روتے ہیں ، انہوں نے کہا کہ حکومت کے پاس وسائل کی کوئی کمی نہیں اس لئے اگر وہ میرا علاج کر ے اور باعزت روزگار بھی دلا دیں تو ہمارا پورا خاندان تباہی سے بچ جائے گا ۔

مزید :

کراچی صفحہ اول -