کوہاٹ ،صوبائی حکومت کی صحت ایمرجنسی کے دعوے جھوٹ کا پلندہ

کوہاٹ ،صوبائی حکومت کی صحت ایمرجنسی کے دعوے جھوٹ کا پلندہ

  

کوہاٹ(بیورورپورٹ) صوبائی حکومت کی صحت ایمرجنسی کے نعرے جھوٹے نکلے ۔RHCاسترزئی کو خود علاج کی ضرورت پڑ گئی۔سٹاف کی کمی کے ساتھ ساتھ ادویات کی کمی اور بلڈنگ بھی بوسیدحال‘ کسی بھی وقت کسی حادثے کا سبب بن سکتی ہے ایمرجنسی بلکہ معمولی بیماری کے لئے بھی مریضوں کو کوہاٹ یا پشاور ریفر کیا جاتا ہے جو ڈاکٹر موجود ہیں وہ بھی صحیح ڈیوٹی نہیں کرتے جو کہ صوبائی حکومت کے لئے لمحہ فکریہ ہے ۔ان خیالات کا اظہا ر علاقہ استرزئی کے مشران ، ڈسٹرکٹ کونسلر میں شاہ رضا ، کونسلر وہاب علی ، قمبر علی و دیگر مشران نے میڈیا کے ساتھ بات چیت کرتے ہوئے کیا انہوں نے کہا کے اس ہسپتال پر کمشنر کوہاٹ ، اسسٹنٹ کمشنر، ضلعی ناظم اور دیگر افسران نے کئی بار چھاپے لگائے ہیں لیکن اس ہسپتال کی حالت بہتر نہ ہو سکی انہوں نے کہا کہ ہزاروں نفوس پر مشتمل علاقہ بنگش کے لئے واحد RHCہسپتال جس میں سہولیات کا فقدان ہے صحت سہولیات کے بجائے صحت عذاب بن گیا ہے کیونکہ عوام دور دراز علاقوں سے سپیشل گاڑیوں میں آکر ہسپتا ل پہنچ جاتے ہیں لیکن یہاں پر نہ ڈاکٹر ، نہ ادویات اور نہ ہی سہولیات موجود ہوتی ہیں۔ہسپتال میں پانی جیسی بنیادی سہولت تک موجود نہیں۔انھوں نے کہا کہ ہم صوبائی حکومت اور وزیر صحت سے مطالبہ کرتے ہیں کہ RHCاسترزئی کی حالت بہتر کر کے اسے فعال کیا جائے۔

مزید :

کراچی صفحہ اول -