بلدیاتی ترمیمی ایکٹ ،حکومت سندھ سے تفصیلی جواب طلب

بلدیاتی ترمیمی ایکٹ ،حکومت سندھ سے تفصیلی جواب طلب

کراچی (اسٹاف رپورٹر)سندھ ہائی کورٹ نے سندھ ہائی کورٹ میں بلدیاتی ترمیمی ایکٹ 2015 کے خلاف درخواست پر حکومت سندھ سے تفصیلی جواب طلب کرلیا۔ دو رکنی بینچ کے روبرو سندھ ہائی کورٹ میں بلدیاتی ترمیمی ایکٹ 2015 کے خلاف درخواست پر سماعت ہوئی۔ سینئر وکیل ذوالفقار علی ڈومکی نے کہا کہ ترمیمی ایکٹ میں دہری شہریت رکھنے والوں کو انتخابات میں حصہ لینے کی اجازت دی گئی ہے۔ سندھ اسمبلی نے ترمیمی ایکٹ میں دہری شہریت پر پابندی شرط ختم کردی جو آئین پاکستان سے متصادم ہے۔ بلدیاتی قانون میں پہلے دوہری شہریت والوں کا انتخابات میں حصہ لینے پر پابندی تھی۔ ترمیمی کے بعد شق 36 ختم کرکے دوہری شہریت والوں کو حصہ لینے کی اجازت دے دی گئی۔ ایڈیشنل ایڈووکیٹ جنرل شبیر شاہ نے کہا کہ دہری شہریت کی پابندی صرف ارکان سینیٹ، قومی و صوبائی اسمبلی کے انتخابات کے لئے ہے۔ بلدیاتی قانون میں دوہری شہریت کی پابندی عائد نہیں ہوتی۔ ایڈیشنل ایڈووکیٹ جنرل نے کہا ترمیم آئین پاکستان سے متصادم نہیں ہے۔ عدالت نے ریمارکس دیئے کہ یہ کیسے ممکن ہے، آئین جو پابندی ہے اس کا اطلاق بلدیاتی انتخابات پر نہ ہو۔ عدالت نے 20 اپریل پر حکومت سندھ سے تفصیلی جواب طلب کر لیا۔

مزید : کراچی صفحہ اول