پا ک بھارت انڈس واٹر کمیشن کا 2روزہ سالانہ اجلاس کل سے شروع ہوگا

پا ک بھارت انڈس واٹر کمیشن کا 2روزہ سالانہ اجلاس کل سے شروع ہوگا

نئی دہلی (آئی این پی) پا ک بھارت انڈس واٹر کمیشن کا 2روزہ سالانہ اجلاس جمعرات 29مارچ سے شروع ہوگا۔ بھارتی میڈیا کے مطابق بھارت اور پاکستان کے درمیان مستقل انڈس کمیشن کا اجلاس جمعرات کو شروع ہوگا جس میں انڈس واٹرمعاہدے کے تحت مختلف مسائل پر غور کیا جائے گا ۔سالانہ اجلاس میں بھارتی واٹر کمشنر پی کے سکسینا اور وزارت خارجہ کے عہدیدار بھارتی وفد کا حصہ ہونگے جبکہ پاکستان کے چھ رکنی وفد کی قیادت سید محمد مہر علی شاہ کریں گے ۔اجلاس دونوں ممالک کے درمیان جاری مختلف معاملات پر کشیدگی کے پس منظر میں ہوگاجس میں سفارتکاروں کو ہراساں کرنا بھی شامل ہے ۔سرکاری ذرائع کا کہنا ہے کہ دونوں ممالک کے درمیان واٹر کمیشن کا اجلاس 29اور 30مارچ کو ہوگا۔ذرائع کے مطابق اجلاس میں لوئر کلنائی اور پاکل دل پن بجلی منصوبوں پر بھی تفصیلی بات چیت ہوگی ۔ اس سے قبل پا ک بھارت انڈس واٹر کمیشن کا اجلاس 20اور 21مارچ کو اسلام آباد میں ہوا تھا جس میں بھارت نے مایار پن بجلی منصوبہ کے ڈیزائن میں تبدیلی کی یقین دہانی کرادی جبکہ لوئر کلنانی اور پکل دل کے منصوبوں کا بھی دوبارہ مشاہدہ کرنے پر اتفاق کیا تھا۔خیال رہے کہ بھارت نے 2012 میں 120میگاوٹ کے مایار پن بجلی منصوبہ کا ڈیزائن پاکستان کو دیا تھا۔واضح رہے کہ پاکستان اور بھارت کے درمیان سندھ طاس معاہدہ 19ستمبر 1960میں ہوا تھا،معاہدے پر صدر ایوب خان اور بھارتی وزیراعظم جواہر لال نہرو نے دستخط کئے تھے،معاہدے کے تحت مشرقی دریا بیاس،راوی اور ستلج کا کنٹرول بھارت کو دیا گیا تھا جبکہ معاہدے کے تحت مغربی دریا سندھ ،جہلم اور چناب کا کنٹرول پاکستان کو دیا گیا تھا۔

انڈس واٹر کمیشن

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر