کورونا وائرس، وہ ملک جس نے بیرون ملک سے آنیوالے تمام مسافروں کو ہی قرنطینہ کرنے کا فیصلہ کرلیا

کورونا وائرس، وہ ملک جس نے بیرون ملک سے آنیوالے تمام مسافروں کو ہی قرنطینہ ...
کورونا وائرس، وہ ملک جس نے بیرون ملک سے آنیوالے تمام مسافروں کو ہی قرنطینہ کرنے کا فیصلہ کرلیا

  

کینبرا(شِنہوا)آسٹریلوی وزیراعظم سکاٹ موریسن نے اعلان کیا ہے کہ اتوار سے آسٹریلیا میں آ نے والے ہر شخص کو لازمی طور پر 2ہفتوں کے قرنطینہ میں رکھا جائے گا ۔بڑھتی ہوئی تشویش کے پیش نظر کہ آنے والے موجودہ قرنطینہ کے اقدامات پر عمل

درآمد نہیں کررہے، موریسن نے جمعہ کی سہ پہر کہا کہ ملک میں آ نے والے تمام مسافرو ں کو ہوٹلوں میں لازمی طور پر قرنطینہ سے گزرنا ہوگا ۔ ریاستی اور علاقائی حکومتیں ان نئے سخت اقدامات کو مربوط بنا ئیں گی اور آسٹریلوی دفاعی افواج کی جانب سے اس پر عمل درآمد کرایا جائے گا ۔

موریسن نے کہا کہ ایک اندازے کے مطابق آسٹریلیا میں کرونا وائرس کے 2تہائی مصدقہ کیسز ان لوگوں سے منسلک کئے جاسکتے ہیں جو حال ہی میں بیرون ممالک سے واپس آئے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ ریاستیں اور علاقائی حکام تمام آنے والوں کو ہوائی اڈے سے ہوٹلوں اور دیگر رہائشی مقامات پر 2ہفتوں کے لئے قرنطینہ میں بجھوانے کے ذمہ دار ہوں گے جہاں سے وہ یہ عرصہ مکمل کرنے کے بعد ہی اپنے گھروں میں واپس جا سکیں گے۔ آسٹریلیا میں کرونا وائرس کی تعداد 3ہزار سے زیادہ بڑھ گئی ہے جبکہ اموات کی تعداد دو دنوں میں 8 سے بڑھ کر 13 ہوگئی ہے ۔

موریسن نے کہا کہ وہ آنے والے دنوں میں مئوثر معاشی اقدامات کے تیسرے مرحلے کا اعلان کریں گے جس میں کاروبار کو "ہائبر نیٹ" کرنے کا منصوبہ شامل ہوگا تاکہ کروناوائرس عالمی وبا کی وجہ سے بند ہونے والے کاروباری اداروں کی مدد کی جاسکے۔اس سے قبل دو مرحلوں پر مشتمل مئو ثر پیکج کا حجم مجموعی طور پر 83 ارب 60 کروڑ آسٹریلوی ڈالرز (50ارب90کروڑ امریکی ڈالرز )ہے۔

مزید :

بین الاقوامی -