سینیٹر ساجد میر علامہ ناصر مدنی کے گھر پہنچ گئے،حکومت سے ایسا مطالبہ کر دیا کہ ناصر مدنی یہ کہنے پر مجبور ہوجائیں گے کہ ‘‘جانو آئی ایم ہیپی‘‘

سینیٹر ساجد میر علامہ ناصر مدنی کے گھر پہنچ گئے،حکومت سے ایسا مطالبہ کر دیا ...
سینیٹر ساجد میر علامہ ناصر مدنی کے گھر پہنچ گئے،حکومت سے ایسا مطالبہ کر دیا کہ ناصر مدنی یہ کہنے پر مجبور ہوجائیں گے کہ ‘‘جانو آئی ایم ہیپی‘‘

  

 لاہور (ڈیلی پاکستان آنلائن)  مرکزی جمعیت اہل حدیث پاکستان کے سربراہ سینیٹر پروفیسر ساجد میر نے کہا ہے کہ علماء پر حملے ناقابل برداشت ہیں،مولانا ناصر مدنی پر ظلم کرنے والے گروہ کو عبرت ناک سزا ملنی چاہیے،حکومت کو چاہیے کہ ناصر مدنی کی سیکورٹی کا مناسب انتظام کرے۔

علامہ ناصر مدنی کی رہائش گاہ کاہنہ میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے سینیٹر علامہ ساجد میرنے کہا کہ مجرموں کا پکڑا جانا حوصلہ افزا اقدام ہے،ہم پولیس اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کو خراج تحسین پیش کرتے ہیں اور امید کرتے ہیں کہ واقعہ کے اصل محرکات اور ماسٹر مائنڈ تک بھی پہنچا جائے گا اور سازش کو بے نقاب کیا جائے گا۔مولانا ناصر مدنی کی خیریت دریافت کرنے کے موقع پر ان کا کہنا تھاکہ مولاناناصرمدنی کا شمار امن کے داعی علماء میں ہوتا ہے، بے ضرر انسان کو تشدد کا نشانہ بنا نے والے کسی رعائیت  کے مستحق نہیں،مولانا ناصر مدنی کے منفرد اسلوب سے بے شمار نوجوان راہ راست پر آئے،مولانا نا صر مدنی کی دین حق کے فروغ کے لیے خدمات لائق تحسین ہیں۔

انہوں نےکہاکہ دلیل کی جگہ گولی جاہل معاشروں کی علامت ہوتی ہے،جس وحشیانہ اندازکےساتھ ان پر ظلم کیا گیا وہ انتہائی افسوس ناک اور ظالمانہ فعل ہے، حکومت کو چاہیے کہ ناصر مدنی کی سیکورٹی کا مناسب انتظام کرے، پولیس اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کو اپنی ذمہ داریاں پوری کرنی چاہئیں ۔ علامہ ساجد میر کا کہنا تھا کہ ہم لاکھ سیاسی اختلاف کرسکتے ہیں مگر تشدد کی اجازت نہیں دے سکتے،ہم خطے میں امن کے داعی ہیں‘ علماء کرام پر حملے ناقابل برداشت ہیں،ملک کی موجودہ صورتحال بہت نازک ہے،علما ء کرام ملک میں امن وسلامتی کیلئے اپنا کردار ادا کرتے رہیں گے،ہمیں راست اقدام پر مجبور نہ کیا جائے،ناصر مدنی نے ہمیشہ اتحاد اتفاق کی بات کی ہے ان پر حملہ حکومت کے لیے لمحہ فکر یہ ہے، ایسی بزدلانہ کارروائیاں علماء کے حوصلوں کو پست نہیں کر سکتیں،ایک گہری سازش کے تحت علماء کرام کو نشانہ بنایا جارہا ہے،حکومت کو چاہیے کہ علما کرام کی سییکورٹی یقینی بنائے۔

اس موقع پر مولاناناصر مدنی نے اس عزم کا اظہار کیا کہ میں علامہ ساجد میر کی قیادت میں قرآن و سنت کی دعوت کا پرچم بلند رکھوں گا،دین کے راستے میں مشکلات نئی بات نہیں ہے، ہمارے اسلاف کی دعوت وعزیمت کے حوالے سے ایک تاریخ ہے،ہم اپنے اسلاف کی روایات کو زندہ رکھیں گے،علامہ ساجدمیر کے ہمراہ مولانا عبدالباسط شیخوپوری، میاں راشد، حافظ بابر فاروق رحیمی، حافظ بابر سلفی بھی موجود تھے۔

مزید :

علاقائی -پنجاب -لاہور -